القاعدہ کا پاکستان پرالظواہری کی بیوی کو حراست میں لینے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

شدت پسند تنظیم القاعدہ نے پاکستان کی سیکیورٹی فورسز پر تنظیم کے سربراہ ایمن الظواہری کی بیوی اور القاعدہ کے مقتول جنگجوئوں کے دو دیگر خاندانوں کو ایک سال سے زیرحراست رکھنے کا الزام عاید کیا ہے۔

جمعہ کو القاعدہ کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کی'خائن' سیکیورٹی فورسز نے الظواہری کی اہلیہ اور متعدد دیگر افراد کو حراست میں لے رکھا ہے۔ انہیں ایک سال قبل وزیرستان سے حراست میں لیا گیا جہاں وہ مسلسل فضائی حملوں سے بچنے کے لیے وہاں سے فرار ہونے کی کوشش کررہے تھے۔

بیان میں القاعدہ نے پاکستانی حکومت، مسلح افواج اور امریکی قیادت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے القاعدہ کمانڈروں کے اہل خانہ کو'غیرقانونی' طور پرحراست میں رکھنے کا رکھنے کا الزام عاید کرتے ہوئے اسے مجرمانہ طرز عمل قرار دیا ہے۔

پاکستان کی طرف سے القاعدہ کے اس دعوے پر کسی قسم کا فوری رد عمل سامنے نہیں آیا۔

مصری نژاد ایمن الظواہری سنہ 2011ء کو اسامہ بن لادن کی ہلاکت کے بعد القاعدہ کے سربراہ مقرر ہوئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں