.

بشار الاسد نے ماموں زاد بھائی رامی مخلوف کی کمپنیوں کو ہتھیا لیا !

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

حالیہ چند گھنٹوں کے دوران سوشل میڈیا پر زیر گردش خبروں کے مطابق شامی صدر بشار الاسد کے ماموں زاد بھائی رامی مخلوف کو اس کے دو بھائیوں سمیت نظر بند کر دیا گیا ہے۔ تاہم ابھی تک اس خبر کی تصدیق نہیں ہو سکی۔

رامی مخلوف ایک کاروباری شخصیت ہے جس کی یورپ اور امریکا کی جانب سے سرزنش کی جا چکی ہے۔ اس کی وجہ غیر قانونی طور پر دولت کا حصول اور بشار الاسد کی حکومت کے لیے عسکری اور اقتصادی سپورٹ ہے۔ مخلوف ایک عظیم الشان مالی سلطنت کا مالک ہے جس کی بنیاد اس نے شام میں ڈالی۔ وہ نہ صرف شام بلکہ دنیا کے کئی حصوں میں غیر قانونی کاروباری سرگرمیوں میں ملوث رہا ہے۔

غسان جدید انجینئرنگ کے شعبے میں مشاورت کے ماہر ہیں۔ انہیں گذشتہ ہفتوں کے دوران بشار حکومت نے بدعنوانی کے معاملات کا انکشاف کرنے پر گرفتار کر لیا تھا۔ غسان کے مطابق بشار کے زیر انتظام شامی "صدارتی کارپوریشن" نے رامی مخلوف کی کمپنیوں پر ہاتھ ڈال دیا ہے ! انہوں نے اس حوالے سے بشار الاسد کے فیصلے کو حیران کن اور بڑا فیصلہ قرار دیا۔ غسان نے مالی بدعنوانی کی دنیا کے دیگر ناموں کے انکشاف کی دھمکی بھی دی ہے۔

شامی ویب سائٹوں کے مطابق بشار الاسد نے اپنے ماموں کے بیٹے رامی مخلوف کو نظر بند کر دیا ہے۔ فیس بک ذرائع کے غیر مصدقہ ذرائع کا کہنا ہے کہ بشار الاسد نے مخلوف سے ایک بڑی رقم کا مطالبہ کیا تھا۔ مخلوف نے سیالیت کی عدم دستیابی کے سبب یہ مطالبہ پورا کرنے سے انکار کر دیا۔ نوبت یہاں تک آن پہنچی کہ مخلوف کی کمپنیوں میں کام کرنے والے تمام مینجروں اور ڈائریکٹروں کو بھی تحقیقات کے لیے صدارتی محل پہنچا دیا گیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ بشار الاسد کا اس سلسلے میں رامی مخلوف کے والد اور اپنے ماموں محمد مخلوف کو حراست میں رکھنا تقریبا ناممکن ہے۔ الاسد خاندان کے "خزانچی" کے طور پر معروف 84 سالہ محمد مخلوف کو کئی شدید امراض کا سامنا ہے۔ محمد مخلوف کو سابق شامی صدر حافظ الاسد کے زمانے سے آل الاسد خاندان کی مالی رقوم کا مینجر شمار کیا جاتا ہے۔

ذرائع کے نزدیک بشار الاسد رامی مخلوف کی کمپنیوں پر ہاتھ ڈال کر انہیں دیگر افراد کے حوالے کرنا چاہتا ہے۔ بالخصوص یورپی اور امریکی پابندیوں کے بعد جنہوں نے بشار کے زیادہ تر رشتے داروں کو لپیٹ میں لے لیا ہے۔ بشار الاسد مالی اور اقتصادی سطح پر "مفلوج" ہو چکا ہے۔

شامی امور کے مبصرین کے مطابق بشار نے رامی مخلوف کے ساتھ جو کچھ کیا ہے وہ ایک طرح سے مخلوف کا تختہ الٹنے کے مترادف ہے۔ بالخصوص جب کہ مخلوف شام میں بدعنوانی اور غیر قانونی منافع خوری کی سب سے بڑی علامت بن چکا ہے۔ مبصرین کا کہنا ہے کہ بشار کے لیے مخلوف سے چھٹکارہ حاصل کرنا اس کے پیچھے چھپنے سے زیادہ فائدے مند ہے۔