ایرانی تیل بردار جہاز نے شام کا رخ کر لیا ہے: پومپیو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کا کہنا ہے کہ واشنگٹن کے پاس موجود مصدقہ معلومات کے مطابق ایرانی تیل بردار جہاز ایڈریان ڈاریا 1 نے شام کا رخ کر لیا ہے۔

جمعے کے روز پومپیو نے اپنی ٹویٹ میں بتایا کہ "مصدقہ معلومات سے پتہ چلا ہے کہ ایرانی تیل بردار جہاز شام میں طرطوس کی بندرگاہ کی جانب گامزن ہے .. میں امید کرتا ہوں وہ اپنا روٹ تبدیل کر لے گا"۔

امریکی وزیر خارجہ کا مزید کہنا تھا کہ "ظریف کا اعتبار کرنا بہت بڑی غلطی ہے"۔ ان کا اشارہ ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف کی جانب تھا جنہوں نے برطانیہ کو باور کرایا تھا کہ ایرانی تیل بردار جہاز شام ہرگز نہیں جائے گا۔

اس سے قبل امریکی وزارت خزانہ نے جبل طارق کی انتظامیہ کی طرف سے تحویل میں لیے جانے کے بعد چھوڑے گئے ایرانی تیل بردار جہاز 'یڈریان ڈاریا 1' کو بلیک لسٹ کرتے ہوئے اس کے مالکان پر پابندیاں عائد کر دیں۔ مغربی ذرائع ابلاغ کی رپورٹس کے مطابق ایرانی تیل بردار جہاز پر لادا گیا تیل چھوٹے جہازوں پر منتقل کر کے اسے شام کے حوالے کیا جائے گا۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق اگر ایرانی تیل بردار جہاز پر موجود تیل شام کو بیچا جاتا ہے تو یہ اس جہاز کی رہائی کے لیے طے پائے معاہدے کی کھلی خلاف ورزی ہوگی کیوں کہ معاہدے کے تحت ایران کسی ملک کو یہ تیل فروخت کرنے کا مجاز نہیں۔

امریکی اخبار 'وال اسٹریٹ جرنل' کے مطابق امریکی وزارت خارجہ ایرانی تیل بردار جہاز پر موجود تیل شام کو فروخت کرنے کا معاملہ ناکام بنانے کی کوشش کر رہی ہے۔

قبل ازیں ترکی کے وزیرخارجہ نے ایک بیان میں کہا تھا کہ ایرانی تیل بردار جہاز لبنانی بندرگاہ کی طرف جا رہا ہے تاہم بعد ازاں انہوں نے اپنا بیان واپس لے لیا تھا۔ ترک وزیر کا کہنا تھا کہ ایرانی جہاز لبنانی پانیوں کی طرف جا رہا تھا لبنان کی طرف نہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں