.

نئی دستاویزی فلم میں یورپ میں دہشت گردی کے لیے قطر کی خفیہ سپورٹ بے نقاب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایک نئی دستاویزی فلم کے ذریعے ،،، دہشت گردی کے لیے قطر کی سپورٹ کے مزید شواہد سامنے آ رہے ہیں۔ یہ دستاویزی فلم یورپ میں دہشت گرد جماعتوں کے لیے دوحہ کی جانب سے فنڈنگ سے متعلق نئی تفصیلات کا انکشاف کرے گی۔

انگریزی ویب سائٹ 7D news کے مطابق فرانس اور بیلجیم کی مشترکہ دستاویزی فلم میں ہزاروں خفیہ دستاویزات کو بنیاد بنایا گیا ہے۔ ان دستاویزات سے ثابت ہوتا ہے کہ قطر نے یورپ کے کئی ممالک میں الاخوان المسلمین تنظیم کی سپورٹ کے لیے اداروں اور منصوبوں کی فنڈنگ کی۔

یہ دستاویزی فلم بیلجیم کے ٹی وی چینلRTBF پر نشر کی جائے گی۔ فلم میں دوحہ کے دوغلے پن اور ترکیبوں پر روشنی ڈالی گئی ہے جن کا مقصد اپنے اصل مقاصد کے حوالے سے چکمہ دینا ہے۔ ان مقاصد کا درحقیقت قطر کی جانب سے بلند کیے جانے والے فلاحی اور خیراتی اعمال کے نعروں سے کوئی تعلق نہیں۔

یہ دستاویزی فلم اس سے قبل سامنے آنے والی ایک اور دستاویزی فلم کو پایہ تکمیل تک پہنچائے گی جس میں "قطر چیریٹی" فاؤنڈیشن کو تفصیل کے ساتھ زیر بحث لایا گیا تھا۔ قطر کی حکومت نے اس ادارے کو یورپ میں اپنی شدت پسندانہ کوششوں کو چھپانے کے واسطے استعمال کیا۔

مذکورہ نئی دستاویزی فلم فرانسیسی صحافی فرانسوا میزور کے تیار کردہ ایک پروگرام کے حصے کے طور پر نشر کی جائے گی۔ اس میں انکشاف کیا جائے گا کہ قطر نے یورپ میں 140 منصوبوں اور ثقافتی مراکز کی فنڈنگ کس طرح کی جن کے ڈانڈے دہشت گرد تنٖظیم الاخوان سے جا کر ملتے ہیں۔

اس دستاویزی فلم کو تیار کرنے میں دو سال کا عرصہ لگا۔ فلم کی اہمیت کا سبب اس میں شواہد اور ماہرین کے تجزیوں کا شامل کیا جانا ہے۔ اس سے بھی زیادہ اہم بات یہ کہ فنڈنگ حاصل کرنے والے اداروں کے سربراہان کے ساتھ خصوصی بات چیت بھی سامنے لائی گئی ہے۔

دستاویزی فلم سے معلوم ہونے والے حقائق میں سے یہ بھی ہے کہ دوحہ 2014 سے یورپ میں دہشت گرد اداروں کی سپورٹ کے لیے 7 کروڑ یورو سے زیادہ کی رقم خرچ کر رہا ہے۔

اسی طرح فلم میں قطر کی جانب سے ایک شدت پسند مہم کی سپورٹ کا بھی انکشاف ہوا جس نے 6 یورپی ممالک کے اندر سرگرمیاں انجام دیں۔ ان میں 100 سے زیادہ وہ مںصوبے شامل ہیں جن کا مقصد مذکورہ ممالک میں مسلمانوں کے اندر متضاد ثقافت کو جنم دینا تھا۔

دستاویزی فلم نے یورپی ممالک میں اُن منصوبوں کی طویل فہرست کو بھی بے نقاب کیا ہے جن کو قطر کروڑوں ڈالروں کی فنڈنگ دے رہا ہے۔

یہ فلم فرانس کے دو صحافیوں کی جانب سے شائع ہونے والی کتابThe Qatar Papers کے شائع ہونے کے چند ماہ بعد سامنے آئی ہے۔

کتاب کے مصنفین Christian Chesnot اور Georges Malbrunot ہیں۔

اس کتاب میں قطری تنظیم کیو سی کی اُن مالی رقوم کے بارے میں ناقابل تردید ثبوت پیش کیے گئے ہیں جو یورپ بالخصوص فرانس، اٹلی، بیلجیم، جرمنی، سوئٹزرلینڈ، ناروے اور سربیا وغیرہ میں متعدد مساجد، ثقافتی پروگراموں اور مذہبی سوسائٹیوں کو بھیجی جاتی ہے۔

فرانس کے ہفت روزہ اخبارLa Tribune نے بھی کچھ عرصہ قبل ایک رپورٹ شائع کی تھی۔ ایک فرانسیسی لکھاری اور ماہر کی اس رپورٹ میں یورپ میں دہشت گردی اور انتہا پسندی پھیلانے میں قطر کے کردار کا انکشاف کیا گیا۔ اس کے علاوہ پورے براعظم میں سیکڑوں اسلامی تنظیموں کے ساتھ بالواسطہ رابطوں کو بھی سامنے لایا گیا۔

گذشتہ ماہ کی پانچ تاریخ کو برطانوی اخبارThe Times نے ایک تفصیلی اور گہرا تحقیقی مطالعہ پیش کیا تھا۔ اس میں انکشاف کیا گیا کہ "الريان" بینک برطانیہ کی "غیر دوستانہ" اسلامی تنظیموں کی فنڈنگ کر رہا ہے۔ بینک کے 70% حصص قطری کمپنیوں اور اداروں کے پاس ہیں۔