.

دو ہزار میٹر کی بلندی پرواقع سعودی عرب کی سرسبز وشاداب وادی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے جنوبی علاقے زرعی اراضی کے حوالے سے مشہور ہیں۔ یہاں کی آبادی غیر ہموار زمینوں میں کاشت کاری اور کھیتی باڑی کے لیےبارش کے پانی کو محفوظ کرکے ان سے فصلوں اور کھیتوں کو سیراب کرتی ہے۔

گھرں کی چھتوں پر جمع ہونےوالا پانی مٹی کے تحفظ کے ساتھ ساتھ اس کے کٹائو کو روکنے میں مدد دیتا ہے۔اس کے بہاؤ کو کم کرنے اور اندرونی رساو کی شرح کو بڑھانے ،چشموں اور نہروں کا بہاؤ اور تسلسل بڑھانے کے ساتھ ساتھ سطح اور زمین کے اندر موجود آبی ذخائر کے تحفظ میں مدد دیتا ہے۔ یہ طریقہ نسلوں سے مقامی آبادی کا ایک زرعی ورثہ ہے۔

کسان کھیتوں کےدرمیان پانی کی نالیاں اور فالتو پانی کو محفوظ راستے سے نکاسی کےلیے پانی کی نالیاں بناتے ہیں جسے مقامی سطح پر 'زیبر' کہا جاتا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ نے جنوبی عسیر کی بلقرن گورنری میں واقع اس سرسبز وشاداب وادی کی تصویر اپنے قارئین کے لیے بھی شائع کی ہیں۔ اس علاقے میں کاشت کیے جانے والے پھلوں میں انگور مشہور ہے جب کہ کئی قسام کے اناج بھی کاشت کیے جاتے ہیں۔یہ جگہ سطح سمندر سے دو ہزار میٹر کی بلندی پر واقع ہے۔