.

قطر دہشت گردوں کی مالی مدد جاری رکھے ہوئے ہے: عادل الجبیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے وزیر مملکت برائے امور خارجہ عادل الجبیر نے کہا ہے کہ قطر دہشت گردوں اور شدت پسندوں کی مالی حمایت جاری رکھے ہوئے ہے۔ انہوں نے نیویارک میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس سے قبل منگل کی شام صحافیوں کے ساتھ بات چیت میں کہا کہ دوحا دہشت گردی کی مالی معاونت جاری رکھے ہوئے ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ قطر نے سنہ 2014ء میں سعودی عرب کے ساتھ معاہدہ کیا تھا کہ وہ دہشت گردوں کی مالی مدد بند کرے گا مگر قطر نے اس معاہدے پرعمل درآمد نہیں کیا۔

انہوں نے کہا کہ قطر شدت پسندوں اور دہشت گردوں کی مالی مدد کے ساتھ پڑوسی ملکوں کے داخلی معاملات میں مداخلت کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہے۔

سعودی وزیر مملکت برائے خارجہ امور نے کہا کہ علماء کو ٹیلی ویژن پرآنا اور خودکش بم دھماکوں کا جواز پیش کرنا ناقابل قبول تھا۔ان کا اشارہ قطری حمایت یافتہ مسلم یونین کے سابق رہ نما یوسف القرضاوی اور قطری میڈیا پلیٹ فارم کے دیگر علما کے بیانات اور ان کے فتووں کی طرف تھا جنہوں نے خود کش حملوں کو اسلام میں جائز قرار دیا تھا۔

حزب اللہ اور الحشد الشعبی کی معاونت

سعودی عرب کے وزیر نے دعویٰ کیا کہ قطر نے لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ عراق میں پاپولر موبلائزیشن (الحشد الشعبی) کو لاکھوں ڈالر فراہم کیے ہیں۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ قطر کو ایک اچھا ہمسایہ ملک بننے کے لیے 1996ء سے جاری اپنی پالیسیوں میں تبدیلی لانا ہوگی۔ قطر کے ساتھ اس کی موجودہ پالیسیوں جاری رہتے ہوئے اچھے تعلقات کا قیام ممکن نہیں۔

عادل الجبیر کا کہنا تھا کہ قطر نے سنہ 2014ء میں سعودی عرب کے ساتھ معاہدہ کیا تھا مگر اس پرعمل درآمد نہیں کیا گیا۔ قطر خطے کے دہشت گرد اور انتہا پسند گروپوں کی مالی مدد جاری رکھے ہوئے ہے۔ سعودی عرب نے پانچ سال قطر کی طرف سے معاہدے پرعمل درآمد کا انتظار کیا جس کے بعد ہمیں قطر کے حوالے سے اپنا موقف تبدیل کرنا پڑا۔

خیال رہے کہ جولائی 2017 کو سعودی عرب ، متحدہ عرب امارات ، مصر اور بحرین نے دہشت گردی کی حمایت کرنے پر قطر کے بائیکاٹ کا اعلان کیا تھا۔ چاروں ممالک کی طرف سے قطر کے سامنے مطالبات کی ایک فہرست پیش کی گئی ہے جس میں دوحا کی طرف سے دہشت گردوں کی مالی معاونت روکنے کا مطالبہ اور دہشت گردوں کی پشت پناہی بندکرنا شامل ہے، تاہم قطر کی طرف سے عرب ممالک کے مطالبات پرکوئی توجہ نہیں دی گئی۔