.

عراق اگلے ہفتے شام کے ساتھ "القائم" کی سرحدی گزر گاہ کھول دے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراقی وزیراعظم عادل عبدالمہدی شام کی سرحد کے ساتھ واقع القائم کی گزرگاہ کھول دینے پر آمادہ ہو گئے ہیں۔

العربیہ کے نمائندے نے اس خبر کے ساتھ بتایا ہے کہ القائم کی گزر گاہ آئندہ ہفتے سامان اور مسافروں کے لیے کھول دی جائے گی۔

عراقی حکومت نے نومبر 2017 میں ملک کے مغربی صوبے الانبار میں واقع قصبے القائم کو داعش تنظیم کے قبضے سے واپس لے لیا تھا۔ دارالحکومت بغداد سے 300 کلو میٹر مغرب میں واقع یہ قصبہ عراق میں داعش کے سقوط سے قبل تنظیم کا آخری گڑھ تھا۔

عراق نے 2017 میں داعش تنظیم پر فتح حاصل کرنے کا اعلان کیا تھا۔

عراق تین سرکاری گزر گاہوں کے ذریعے شام کے ساتھ مربوط ہے۔ سرحد کے دونوں جانب ان گزر گاہوں کے مختلف نام ہیں۔ ان میں عراق کی جانب القائم ہے جس کے مقابل شام کی جانب البوکمال ہے۔ اسی طرح عراق کی جانب الولید ہے تو اس کے مقابل شام میں التنف ہے۔ ان کے علاوہ تیسری گزر گاہ عراق میں ربیعہ کے نام سے ہے جب کہ شام میں اس کے مقابل الیعربیہ ہے۔