.

سعودی عرب میں بچےپرتشدد کے مرتکب ملزم کی تلاش جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے پبلک پراسیکیوٹر نے بدھ کے روز ایک ایسے شخص کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کیے جو سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو میں ایک بچے کو زدوکوب کرتے اور اس کے جسم کے کچھ حصوں کو جلاتے دیکھا گیا ہے۔

عوامی مفاد کے تقاضوں کے مطابق اور ضابطہ فوجداری کے آرٹیکل 17 کے مطابق پبلک پراسیکیوشن نے فوٹیج کی چھان بین کرنے اور اس میں دکھائی دینے والے شخص کی شناخت اور گرفتاری کی ہدایت کی ہے تاکہ اس کے خلاف قانون کے مطابق سخت کارروائی عمل میں لائی جاسکے۔

وزارت محنت و سماجی ترقی کے ترجمان خالد ابا الخیل نے کہا ہے کہ سماجی تحفظ یونٹ کے حکام سوشل میڈیا پروائرل ہونے والی فوٹیج کی تصدیق کی کوشش کر رہے ہیں۔

ابا الخیل نے بچے پر تشدد کے بارے میں معلومات رکھنے والے شہریوں سے کہا ہے کہ وہ وزارت سماجی بہبود کے 'ٹویٹر @ mlsd_1919' پر ہیلپ لائن1919 پر فون کریں۔

دوسری جانب سوشل میڈیا پروائرل ہونے والی اس فوٹیج پر سماجی کارکنوں اور شہریوں کی طرف سےشدید مذمت کی جا رہی ہے۔ شہریوں نے بچے پر تشدد کرنے والے شخص کو جلد از جلد پکڑ کر قانون کے حوالے کرنے اور اسے عبرت ناک سزا دینے کا مطالبہ کیا ہے۔