.

بغداد میں العربیہ کے دفتر پر مسلح نقاب پوشوں کا حملہ ، متعدد صحافی زخمی

سیاہ لباس میں ملبوس مسلح آوروں نے عملہ کے آلات اور موبائل فونز توڑ دیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے دارالحکومت بغداد میں واقع العربیہ نیوز چینل کے دفتر پر مسلح نقاب پوش افراد نے حملہ کردیا ہے جس کے نتیجے ادارے کے عملہ کے متعدد ارکان زخمی ہوگئے ہیں۔

بغداد سے العربیہ کے نمایندے نے اطلاع دی ہے کہ ’’مسلح نقاب پوش افراد نے ہمارے دفتر پر دھاوا بولا ہے جس سے ہمارے متعدد ساتھی زخمی ہوئے ہیں۔‘‘فوری طور پر ان حملہ آوروں کی شناخت معلوم نہیں ہوسکی ہے کہ وہ کون تھے اور ان کے مقاصد کیا تھے۔

انھوں نے بتایا ہے کہ ’’سیاہ لباس میں ملبوس ان مسلح حملہ آوروں نے ہمارے آلات اور موبائل فونز توڑ دیے ہیں۔‘‘ان کے بہ قول حالیہ دنوں میں العربیہ کے دفتر کو حملے کی متعدد دھمکیاں موصول ہوئی تھیں۔اس کے باوجود اس حملے کے دوران میں عراق کی وفاقی پولیس کے اہلکاروں نے ہمیں کوئی مدد دینے سے انکار کیا ہے۔

العربیہ کے نمایندے نے مزید بتایا کہ ’’اس حملے کے بعد ہمیں وزیراعظم کے دفتر اور حکام کی جانب سے یہ یقین دہانی کرائی گئی ہے کہ اس کی تحقیقات کی جائے گی۔‘‘

العربیہ نیوز چینل کے دفتر پرحملے کی خبر ایسے وقت میں منظرعام پر آئی ہے جب ہزاروں عراقی ملک بھر میں بے روزگاری ، حکام کی بدعنوانیوں اور شہری خدمات کے پست تر معیار کے خلاف سراپا احتجاج بنے ہوئے ہیں۔

عراقی سکیورٹی فورسز تشدد کے ذریعے اس احتجاجی تحریک کو دبانے کی کوشش کررہی ہیں اور گذشتہ پانچ روز کے دوران میں ان کی تشدد آمیز کارروائیوں اور مظاہرین پر براہ راست فائرنگ سے قریباً ایک سو بیس افراد ہلاک اور چار ہزار کے لگ بھگ زخمی ہوچکے ہیں۔