.

بغداد کی صوبائی کونسل نے گورنر کی برطرفی کی منظوری دے دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے دارالحکومت بغداد کی صوبائی کونسل نے اتفاق رائے سے گورنر کی برطرفی کی منظوری دے دی ہے۔ کونسل کے ارکان کی اکثریت نے اتوار کو گورنر کی برطرفی کے لیے قرارداد کے حق میں ووٹ دیا ہے۔

بغداد سمیت عراق کے مختلف شہروں میں گذشتہ چھے روز سے احتجاجی مظاہرے جاری ہیں۔اس دوران میں سکیورٹی فورسز کی فائرنگ اور جھڑپوں میں ایک سو سے زیادہ افراد ہلاک ہوچکے ہیں اور چھے ہزار سے زیادہ زخمی ہوئے ہیں۔ عراقی شہری ریاستی طاقت کے استعمال پر حکومت کو کڑی تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں۔

ہزاروں عراقی شہری دارالحکومت بغداد اور دوسرے شہروں میں بے روزگاری ، شہری خدمات کے پست معیار اور سرکاری حکام کی بدعنوانیوں کے خلاف گذشتہ منگل سے سراپا احتجاج بنے ہوئے ہیں اور وزیراعظم عادل عبدالمہدی سےاپنے انتخابی وعدے کے مطابق وسیع تر اصلاحات کا مطالبہ کررہے ہیں۔

عراقی وزیراعظم نے ہفتے کے روز بعض اصلاحات کا اعلان کیا تھا۔ان میں سے ایک کے تحت کم آمدنی والے مکین رہائشی اراضی کے لیے درخواست دے سکیں گے اور اس فیصلے کا اطلاق ملک بھر میں ہوگا۔

ان اصلاحات کے تحت مستحقین میں اقامتی پلاٹ تقسیم کیے جائیں گے۔اس کے علاوہ خریداروں کی تعداد میں اضافے کے لیے سود سے پاک رقوم دینے کے پروگرام شروع کیے جائیں گے۔ڈیڑھ لاکھ بے روزگاروں کو مختلف مالی فوائد دیے جائیں گے اور نوجوانوں کے لیے ملازمتوں کے مزید مواقع پیدا کیے جائیں گے۔