.

ایرانی عوام اُٹھ کھڑے ہوں گے اور شیطان رخصت ہو کر رہے گا :فرح پہلوی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سابق شاہ ایران رضا پہلوی مرحوم کی بیوہ شاہ بانو فرح پہلوی کی جانب سے ایرانی عوام کے نام ایک تحریری پیغام جاری کیا گیا ہے۔

شاہ بانو نے اپنے پیغام میں ہزاروں قیدیوں اور کارکنان کے علاوہ آزادی کی راہ میں جان گنوا دینے والوں کو خراج تحسین پیش کیا۔ انھوں نے خاص طور گذشتہ ماہ موت کو گلے لگانے والی ایرانی نوجوان خاتون سحر خدایاری (بلیو گرل) کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ "مرد اور عورت کے حقوق میں مساوات کو یقینی بنانے کی راہ پر سحر ہمارے ساتھ کھڑی ہے اور کھیل کے میدانوں میں خواتین کے داخلے کی اجازت ان حقوق کا محض چھوٹا سے حصہ ہے"۔

سحر خدایاری نے ستمبر میں اپنے پسندیدہ فٹ بال کلب کا میچ دیکھنے کے لیے مرد کا بھیس بدل کر اسٹیڈیم میں داخل ہونے کی کوشش کی تھی مگر وہ پکڑی گئی۔ بعد ازاں جب اسے پتا چلا کہ اس حرکت کی پاداش میں اسے عدالت سے چھ ماہ قید کی سزا ہو سکتی ہے تو اس نے 2 ستمبر کو تہران میں عدالت کے سامنے احتجاجاً خود سوزی کر لی۔ چند روز بعد وہ زخموں کی تاب نہ لا کر دم توڑ گئی۔

شاہ ایران کی بیوہ کے حالیہ پیغام سے قبل ایرانی فٹبال فیڈریشن نے ایران اور کمبوڈیا کے درمیان فٹ بال میچ سے لطف اندوز ہونے کی خواہش مند خواتین کے لیے بھی ٹکٹوں کی فروخت کا آغاز کر دیا۔ یہ میچ آیندہ جمعرات کو کھیلا جائے گا۔ آزادی اسٹیڈیم میں مجموعی طور پر ایک لاکھ افراد کے بیٹھنے کی گنجائش ہے۔ اس میں 3.5 سے 4.5 ہزار (تقریبا 4 فی صد) نشستیں خواتین کے لیے مختص کی گئی ہیں۔

شاہ بانو فرح پہلوی نے اپنے پیغام میں کہا کہ "ان کٹھن دنوں میں کل کے حوالے سے جو چیز ہمیں امید دلا سکتی ہے وہ بلیو گرل کی قربانی ہے .. ہمیں اس شعلے کو جلتا رکھنا ہے جو سحر اپنی جان دے کر بھڑکا گئی"۔

شاہ بانو نے مزید لکھا ہے کہ میں جانتی ہوں کہ ایرانی قوم اپنے کھوئے ہوئے حقوق واپس لینے کے لیے اٹھ کھڑی ہو گی اور انقسام کا یہ سیاہ شیطان اس قدیم سرزمین کے آسمان سے رخصت ہو کر رہے گا۔

یاد رہے کہ حالیہ چند ماہ میں شاہ بانو فرح پہلوی بیانات کے ذریعے ایران میں خواتین کی مختلف مہموں کی حمایت کا اظہار کرتی رہی ہیں۔