.

الریاض: مسجد میں بچوں کے کھلونے لائے جانے کے واقعے کی تحقیقات

مسجد میں کھیل تماشی کی ویڈیو وائرل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی وزرات مذہبی امور کے ترجمان عبد العزیز السکر نے ہفتے کے روز کہا کہ دارالحکومت الریاض کی ایک مسجد میں بچوں کے کھلونے لائے جانے کے واقعے کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق حکومت کی طرف سے تحقیقات اس وقت شروع کی گئیں جب سوشل میڈیا پر الریاض کی ایک مسجد میں بچوں کے کھلونوں سے متعلق ایک ویڈیو وائرل ہوئی۔ وزارت مذہبی امور نے اس فوٹیج کے سامنے آنے کے بعد مسجد میں کھلونوں کی موجودگی کی تحقیقات کے لیے ایک کمیٹی قائم کردی ہے۔

ترجمان نے کہا کہ وزارت مذہبی امور نے مساجد کی انتظامیہ اور آئمہ کرام سرکلر جاری کیے گئے ہیں جن میں انہیں عبادت گاہوں کے تقدس کو برقرار رکھنے، عبادت میں سکون اور مقدس مقامات کا احترام برقرار رکھنے پر زور دیا ہے۔ سرکلر میں کہا گیا ہے کہ مساجد کے تقدس کے خلاف ان میں ہونے والی کسی بھی خلاف قانون سرگرمی کا فوری اور سخت نوٹس لیا جائے گا اور اس میں ملوث افراد کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

العسکر نے وضاحت کی کہ سوشل میڈیا پر وائر ہونے والا کلپ ریاض کے جنوب میں واقع ایک مسجد کی دوسری منزل میں تیار کیا گیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ مسجد میں کھلونے حفظ کے طلباء کے لیے منعقدہ ایک تقریب کے لیے لائے گئے تھے۔ مسجد میں کھیل تماشے کی چیزیں لائے جانے پر حکومت سے اس میں ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی کا فیصلہ کیا ہے۔