.

سعودی عرب : آتش فشاں پہاڑوں کا سب سے بڑا سلسلہ دستاویزی طور پر محفوظ کرنے کی کاوش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مملکت سعودی عرب میں آتش فشاں پہاڑوں کا سب سے بڑا اور معروف ترین سلسلہ 700 برس سے زیادہ عرصے سے ماحولیاتی تبدیلیوں کے سامنے ڈٹا ہوا ہے۔ یہ سلسلہ تقریبا 5892 مربع کلو میٹر کے رقبے پر پھیلا ہوا ہے۔

جبلِ "الہيل" جو علاقے کے لوگوں میں "ابو مخروم" کے نام سے معروف ہے ،،، یہ سعودی عرب کے مغربی ضلع طائف کے شمال مشرق میں 180 کلو میٹر کی دوری پر مہد الذہب شہر کے جنوب میں واقع ہے۔

اَرتھ ایریل ڈاکیومنٹری ٹیم کے مطابق جبل الہیل جس آتش فشاں سلسلے میں واقعے ہے وہ "حرہِ کشب" کے نام سے مشہور ہے۔ مذکورہ ٹیم کے ارکان میں ارضیاتی مقامات کے تجزیاتی مشاورتی ماہرین شامل ہیں۔ جبل الہیل کو حرہ کشب کا مرکزی آتش فشاں شمار کیا جاتا ہے۔ یہ علاقے میں واقع ہونے والا سب سے نیا آتش فشاں ہے۔ لہذا ہم دیکھتے ہیں کہ اس سے نکلنے والا لاوا اطراف کے مقابلے میں سیاہ رنگ کا ہے۔

اَرتھ ایریل ڈاکیومنٹری ٹیم کے قائد عبدالعزیز الدخیل نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ "سعودی عرب کے مقامات کی تصویر کشی اور دستاویزی حفاظت کے سلسلے میں مملکت کے قدرتی مقامات جن میں آتش فشاں شامل ہیں ،،، یہ ہماری ٹیم کے اہم اہداف اور محور میں سے ہیں۔ ہماری ٹیم سعودی عرب کے تاریخی ورثے اور نمایاں مقامات کی دریافت میں دل چسپی رکھتی ہے۔ لہذا جبل الہیل اپنی منفرد شکل کے سبب ہماری ٹیم کے اہداف میں شامل تھا۔ یہ عوام الناس کے لیے غیر معروف آتش فشاؤں میں سے ہے۔ سواری کے ذریعے اس تک پہنچنا ایک مشکل کام ہے۔

یاد رہے کہ مذکورہ ڈاکیومنٹری ٹیم ایک مربوط رضاکارانہ گروپ ہے۔ اس میں ہواباز، فوٹوگرافرز اور سعودی عرب کے آثار قدیمہ اور جغرافیا سے دل چسپی رکھنے والے افراد اور ماہرین کے علاوہ ایسے لوگ بھی شامل ہیں جو فوٹو تصاویر کی پروسیسنگ اور انتظامی دفتری کام میں مہارت رکھتے ہیں۔ یہ ٹیم دریافت اور دستاویزی مقاصد سے سعودی عرب کے اندر کئی مقامات کا سفر کر چکی ہے۔ اس وقت ٹیم کے پاس پیشہ وارانہ نوعیت کی 27 ہزار سے زیادہ فضائی تصاویر ہیں۔