.

عراق کے سیکیورٹی ادارے مظاہرین کا تحفظ یقینی بنائیں: السیستانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے سرکردہ شیعہ رہ نما آیت اللہ علی السیستانی نے ملک میں جاری احتجاجی مظاہروں کے دوران طاقت کے استعمال کی شدید مذمت کرتے ہوئے قانون نافذ کرنے والے اداروں سے مظاہرین کو تحفظ فراہم کرنے پر زور دیا ہے۔

السیستانی کے نائب الشیخ عبدالمہدہ کربلائی نے علی السیستانی کی نیابت میں جُمعہ کے اجتماع سے خطاب میں کہا کہ عراق کے سیکیورٹی اداروں کو چاہیے کہ وہ پرامن مظاہرین کا تحفظ کریں اور طاقت کے استعمال سے گریز کیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ حقیقی اصلاحات اور مطلوبہ تبدیلی پرامن طریقے سے عمل میں لائی جانی چاہیے۔

جمعہ کے روز عراق میں مظاہروں میں ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد اور تشدد کے بارے میں متضاد اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ عراقی ذرائع ابلاغ کے مطابق جمعہ کے روز ہونے والے مظاہروں کے دوران کم سے کم چالیس افراد ہلاک اور دو ہزار سے زاید زخمی ہوگئے ہیں۔

السیستانی نے کہا کہ بدعنوانی کے خلاف جنگ ،سینئر عہدیداروں اور قانون سازوں کے مراعات کی مراعات کا خاتمہ سب سے بہترین اصلاحات ہیں۔ ان کاکہنا تھا کہ گذشتہ دنوں ملک میں ہونے والے پرتشدد مظاہروں کی تحقیقات کے نتائج سامنے نہیں لائے گئے اور تشدد میں ملوث عناصر کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ شیعہ عالم دین نے عراق میں پرتشدد مظاہروں کی تحقیقات کے لیے آزاد عدالت کمیشن قائم کرنے کا بھی مطالبہ کیا۔