.

سعودی عرب مصنوعی ذہانت سے متعلق عالمی کانفرنس کی میزبانی کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں آئندہ سال مارچ کے اواخر میں مصنوعی ذہانت کی عالمی کانفرنس کا انعقاد ہو گا۔ ریاض میں ہونے والی اس کانفرنس کی سرپرستی سعودی ولی عہد اور وزیر دفاع شہزادہ محمد بن سلمان کریں گے۔ وہ سعودی اتھارٹی فار ڈیٹا اینڈ آرٹیفیشل انٹیلی جنس کے مینجمنٹ بورڈ کے چیئرمین بھی ہیں۔ یہ کانفرنس تجربات کے تبادلے اور مقامی اور بین الاقوامی سطح پر معلومات اور مصنوعی ذہانت کی دنیا میں سرگرم اداروں اور کمپنیوں کے بیچ شراکت داری کے معاہدوں کے لیے ایک سالانہ فورم کی حیثیت رکھتا ہے۔

مذکورہ عالمی کانفرنس 30 اور 31 مارچ 2020 کو ریاض شہر میں واقع کنگ عبدالعزیز کنوینشن سینٹر میں منعقد ہو گی۔ کانفرنس سے مصنوعی ذہانت کے میدان میں اور اس جدید شعبے میں عالمی کوششوں میں سعودی عرب کا قائدانہ کردار مضبوط ہو گا۔ علاوہ ازیں کانفرنس میں مصنوعی ذہانت کے معاشرے اور معیشت پر اثرات اور اس ٹکنالوجی سے مستفید ہونے کے طریقوں پر بھی روشنی ڈالی جائے گی۔

سعودی اتھارٹی فار ڈیٹا اینڈ آرٹیفیشل انٹیلی جنس کے سربراہ اور انتظامی کمیٹی کے صدر ڈاکٹر عبداللہ بن شرف الغامدی نے رواں سال 2019 میں "فیوچر انویسٹمنٹ فورم" کے تیسرے ایڈیشن میں کہا تھا کہ مصنوعی ذہانت آج کے دور میں کئی شعبوں کے اندر ڈیجیٹل تغیر میں بنیادی کردار ادا کر رہی ہے۔ ان میں سرکاری، تجارتی، صنعتی شعبوں کے علاوہ صحت اور دیگر میدان شامل ہیں۔

سعودی عرب میں آئندہ سال ہونے والی مصنوعی ذہانت سے متعلق کانفرنس میں سرکاری سطح پر اعلی ترین نمائندگی دیکھنے میں آئے گی۔ کانفرنس میں سیاسی رہ نماؤں، عالمی سطح پر قائدانہ کردار ادا کرنے والی کمپنیوں کے سربراہان اور ٹکنالوجی کی دنیا کی بڑی اور ابھرتی ہوئی کمپنیوں کے علاوہ محققین، دانش ور، سرمایہ کار اور کاروباری منتظمین شرکت کریں گے۔

کانفرنس کے سلسلے میں مصنوعی ذہانت اور متعلقہ شعبوں کے حوالے سے تنوع کا حامل پروگرام ترتیب دیا گیا ہے۔ اس میں شخصیات کے خطاب، ورکشاپس اور مصنوعی ذہانت سے متعلق جدید ترین ایجادات اور مصنوعات کی نمائش شامل ہے۔

مزید معلومات کے لیے کانفرنس کی خصوصی ویب سائٹ www.theglobalaisummit.com کو دیکھا جا سکتا ہے۔

یاد رہے کہ مملکت میں "سعودی اتھارٹی فار ڈیٹا اینڈ آرٹیفیشل انٹیلی جنس" کا قیام اگست 2019 میں ایک شاہی فرمان کے تحت عمل میں لایا گیا تھا۔