.

عراق: علی السیستانی کی طرف سے مظاہرین کے مطالبات کی حمایت کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں اعلی ترین شیعہ مرجع آیت اللہ علی السیستانی نے زور دے کر کہا ہے کہ وہ پُر امن مظاہرین کی جانب سے اصلاحات سے متعلق مطالبات کی تائید کرتے اور سپورٹ کرتے ہیں۔

عراقی خبر رساں ایجنسی کے مطابق السیستانی کے دفتر کے ایک ذمے دار ذریعے نے بتایا ہے کہ السیستانی یہ باور کراتے ہیں کہ پُر امن مظاہروں میں شرکت تمام عراقیوں کا حق ہے۔ ملک کے اعلی ترین شیعہ مرجع علم نے مطالبہ کیا ہے کہ مظاہروں کے دوران سیاسی قوتوں وغیرہ کے حامیوں کی جانب سے السیستانی کا نام استعمال کرنے یا اُن کی تصاویر اٹھانے سے مکمل طور پر گریز کیا جائے۔

اس سے قبل عراقی صدر برہم صالح نے اعلان کیا تھا کہ وزیراعظم عدال عبدالمہدی اپنا استعفا پیش کرنے پر آمادہ ہو گئے ہیں ... تاہم اُن کی شرط ہے کہ اس حوالے سے آئینی اور قانونی تقاضوں کو پورا کیا جائے تا کہ کسی بھی آئینی خلا سے بچا جا سکے۔

صالح نے یہ اعلان جمعے کے روز عراقی پارلیمنٹ کے کئی گروپوں سے ملاقات کے بعد ایک پریس کانفرنس کے دوران کیا۔

عراقی صدر نے اس عزم کا اظہار کیا کہ نئی انتخابی قانون سازی اور انتخابی کمیشن کو ایک "حقیقی" خود مختار اور آزاد کمیشن سے تبدیل کرنے کو یقینی بنا کر قبل از وقت انتخابات کرائے جائیں گے۔