.

تبوک کے غروب آفتاب کے جادوئی مناظر:تصاویر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے تاریخی شہر تبوک میں کئی تاریخی اور مناظر فطرت سے بھرپور مقامات ہیں۔ ان مقامات میں طلوع آفتاب اور غروب آفتاب کے مناظر دیکھنے والوں کی نظروں کو خیرہ کردینے کے لیے کافی ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق تبوک کے نواحی گائوں'علقان' کی طرف بڑھتی سڑکوں، اس کے پہاڑوں کی خوبصورتی، متنوع مقامات اور ان میں طلوع اور غروب آفتاب کے جادوئی مناظر کی تصاویر فوٹو گرافر خالد مقبول العمرانی نے اپنے کیمرے میں محفوظ کیں۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ نے بھی ان دلکش مناظر میں سے کچھ تصاویر اپنے قارئین کی توجہ کے لیے پیش کی ہیں۔ ان تصاویر کو دیکھ کر شک گذرتا ہے کہ آیا یہ تصاویر واقعی تبوک کی ہیں کسی اور خوبصورت اور پرفضاء مقام کی ہیں۔

'العربیہ ڈاٹ نیٹ' سے بات کرتے ہوئے فوٹو گرافر خالد مقبول العمرانی نے بتایا کہ وہ قدرتی اور خوبصورت مقامات کے متعدد البم کئی نمائشوں میں پیش کرچکے ہیں۔ انہیں سعودی عرب میں دلکش مناظر کو اپنے کیمرے میں محفوظ کرنے پر فوٹو گرافی کے سفیر کا ایوارڈ دیا گیا۔ انہوں نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا: "علقان" کے مناظر دیکھنے کے بعد میں مجبور ہوگیا کہ انہیں اپنے کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کروں۔ اس طرح میں نے تبوک کے قدرتی حسن وجمال کے بعض مناظر کو اپنے کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کیا۔ ان تصاویر کو سوشل میڈیا پر غیرمعمولی طورپر پسند کیا گیا۔

ایک سوال کے جواب میں العمرانی نے کہا کہ تبوک جغرافیائی تنوع اور فطری حسن وجمال کا ایک ذخیرہ اپنے اندر سموئے ہوئے ہے۔ اس کے پہاڑ، وادیاں، ساحل سمندر اور صحرا سب دیکھنے والوں کو دعوت نظارہ دیتے ہیں۔

علقان گائوں تبوک سے تبوک کے خوبصورت دیہاتوں میں سے ایک ہے۔ یہ گائوں اس وقت کے خطے کے لوگوں کی توجہ کا مرکز ہے۔ موسم سرما میں یہاں ہونے والی برف باری کی وجہ سے اسے 'برف کا شہر' بھی کہا جاتا ہے۔ یہ مقام اردن کی وادی عقبہ سے 90 کلو میٹر اور تبوک سے شمال مغرب میں 170 کلو میٹر کی دوری پر ہے۔