.

جہادِ اسلامی حملے روک دے، ورنہ مزید ’صدمے سہنے‘ کے لیے تیار رہے: نیتن یاہوکی دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

انتہا پسند اسرائیلی وزیر بنیامین نیتن یاہو نے غزہ سے تعلق رکھنے والی فلسطینی مزاحمتی تنظیم جہادِ اسلامی کو خبردار کیا ہے کہ وہ راکٹ حملے روک دے ،ورنہ وہ مزید ’’ صدموں کو سہنے‘‘ کے لیے تیار رہے۔

انھوں نے بدھ کو اسرائیلی کابینہ کے اجلاس کے موقع پر کہا کہ ’’انھیں (جہادِ اسلامی کو) حملے روکنے یا صدمے سہنے میں سے کسی ایک کا انتخاب کرنا ہوگا۔‘‘

انھوں نے خبردار کیا ہے کہ ’’اسرائیل کسی رحم کے بغیر ان حملوں کا جواب دے گا۔‘‘ ان کی اس دھمکی سے قبل ہی اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی میں منگل سے جہادِ اسلامی کے مزاحمت کاروں کے خلاف کارروائی کے نام پرتباہ کن فضائی حملے جاری رکھے ہوئے ہیں۔ گذشتہ دو روز میں اسرائیلی فوج کے ان جارحانہ حملوں میں شہید ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد بائیس ہوگئی ہے۔

ان میں جہاد اسلامی کے کمانڈرابوالعطا اور ان کی اہلیہ بھی شامل ہے۔ان پر اسرائیلی فوج نے گذشتہ روز غزہ پٹی میں اہدافی حملہ کیا تھا۔اسرائیل نے ان پر اپنے علاقے کی جانب حال ہی میں ایک راکٹ داغنے اور راکٹ حملوں کی منصوبہ بندی کا الزام عاید کیا تھا۔

جہادِ اسلامی نے گذشتہ روز اپنے کمانڈر کی شہادت کے بعد اسرائیل کی جانب کم سے کم 220 راکٹ فائر کیے ہیں اوربدھ کو بھی یہ سلسلہ جاری رکھا ہے۔ اس کے جواب میں اسرائیلی طیاروں نے غزہ پر تباہ کن بمباری جاری رکھی ہوئی ہے۔تنظیم کے ایک عہدہ دار نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر جنوبی اسرائیل کی جانب راکٹ حملے جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے اور کہا ہے کہ دشمن کو اب اپنی حماقت کی قیمت چکانا پڑے گی۔