.

'59 جنرل آڈٹ رپورٹ' شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے حوالے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے جنرل آڈٹ کی 59 ویں سالانہ رپورٹ برائے مالی سال 1439ھ اور 1440ھ خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیزکو پیش کردی گئی۔ اس رپورٹ میں مالی شعبے میں ایک سال کے دوران ہونےوالی اہم کامیابیوں، مالی آڈٹ، کارکردگی اور مالی شعبے میں ہونے والی بہتری کے نتائج شامل ہیں۔

جنرل آڈٹ بیورو کے سربراہ ڈاکٹر حسام بن عبدالمحسن العنقری نےبتایا کہ آڈٹ بیورو سرکاری خزانے کو برقرار رکھنے اور سپلائی کرنےاور ترسیلات کو یقینی بنانے میں کامیاب رہا۔ان کا کہنا تھا کہ مختلف اداروں کےتعاون سے مالی شعبے کو 20 ارب ریال سے زاید کی بچت ہوئی جو کہ گذشتہ برس کی نسبت 127 فی صد زیادہ ہے۔ آڈٹ بیور کے پاس کل رقم اب بھی 66 ارب ریال سے زیادہ ہے جو پچھلے مالی سال کے مقابلے میں 78 فی صد زیادہ ہے۔

ایک سوال کے جواب میں العنقری کاکہنا تھا کہ مجموعی طور پر 270 سرکاری اداروں کے درمیان الیکٹرانک مانیٹرنگ سسٹم کے ذریعے روابط موجود ہیں جب کہ پچھلے سال اس نوعیت کے روابط کی شرح 170 تھی۔

انہوں نے بتایا کہ جنرل آڈٹ بیورو مالیاتی آڈٹ، پرفارمنس، ، آڈٹ بیورو کے ماتحت اداروں میں مالیاتی محکموں اور داخلی آڈٹ محکموں کے ملازمین کے لیے تربیتی پروگرام بھی تیار کرتا ہے۔