.

ترکی ماسکو کے ساتھ میزائل سسٹم کے نئے معاہدے کو جلد مکمل کرنے کا خواہاں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روسی خبر رساں ایجنسی نے پیر کے روز ترکی کے ایوان صدارت کے ایک ذمے دار کے حوالے سے بتایا ہے کہ روس سے مزید S-400 میزائل دفاعی سسٹم کی خریداری کے وقت کا تعین محض ایک فنی مسئلہ ہے ... اور اس حوالے سے معاہدہ عن قریب طے پا جائے گا۔

ہتھیاروں کی برآمد سے معلق روسی سرکاری کمپنی "روسوبورن ایکسپورٹ" کے سربراہ نے گذشتہ ماہ بتایا تھا کہ ماسکو امید رکھتا ہے کہ ترکی کو مزید S-400 میزائل دفاعی سسٹم کی فراہمی کے لیے معاہدے پر آئندہ برس کی پہلی شش ماہی کے دوران دستخط ہو جائیں گے۔

اس طرح کا اقدام ترکی اور امریکا کے بیچ تعلقات کی کشیدگی میں اضافہ کر سکتا ہے۔ واشنگٹن نے روس سے S-400 سسٹم خریدنے کی پاداش میں ترکی کی F-35 لڑاکا طیاروں کی تیاری کے پروگرام میں شرکت کو رواں سال معلق کر دیا تھا۔

روسوبورن ایکسپورٹ کمپنی کے سربراہ الگزینڈر میخیو نے 26 نومبر کو روسی خبر رساں ایجنسی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ ماسکو اور انقرہ سنجیدگی کے ساتھ ترکی کو مزید S-400 سسٹم کی فراہمی پر بات چیت کر رہے ہیں۔ میخیو کے مطابق مذاکرات میں اصل توجہ مالی امور پر مرکوز ہے۔