.

سعدالحریری کی مستقبل تحریک کا سمیرخطیب کو وزیراعظم نامزد کرنے کا فیصلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان میں نئی حکومت کی تشکیل کے لیے اہم پیش رفت ہوئی ہے اور مستعفی وزیراعظم سعدالحریری کے زیر قیادت جماعت مستقبل تحریک نے کاروباری شخصیت سمیر خطیب کو وزیراعظم نامزد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق انھیں مشاورت کے بعد آیندہ سوموار کو باضابطہ طور پر نامزد کردیا جائے گا۔

ایک ذریعے نے بدھ کے روز بتایا ہے کہ لبنان کی دو شیعہ جماعتوں حزب اللہ اور امل نے بھی سمیر خطیب کو وزیراعظم نامزد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔واضح رہے کہ لبنان میں فرقہ وار بنیاد پرمروج نظام حکومت میں وزارتِ عظمیٰ کا منصب سنی مسلمانوں کے لیے مختص ہے اور اس عہدے کے لیے کسی سنی ہی کو نامزد کیا جاسکتا ہے۔

اگر لبنانی پارلیمان میں سنی اور شیعہ دونوں گروپ سمیر خطیب کی حمایت کرتے ہیں تو ان کا انتخاب یقینی ہے۔وہ ایسے وقت میں نئی حکومت کے سربراہ بنیں گے جب لبنان کو بدترین معاشی بحران اور سماجی ابتری کا سامنا ہے۔

لبنان میں 17 اکتوبر سے ہزاروں شہری حکمراں طبقے کی بدعنوانیوں کے خلاف احتجاجی مظاہرے کررہے ہیں۔ مظاہرین نے دارالحکومت بیروت اور بعض دوسرے شہروں میں بڑی شاہراہیں بند کررکھی ہیں۔وہ حکمراں اشرافیہ کی بدعنوانیوں، پست معیار زندگی،بے روزگاری اور معاشی زبوں حالی کے خلاف سراپا احتجاج بنے ہوئے ہیں۔

مظاہرین نے وزیراعظم سعدالحریری، صدر میشیل عون اور پارلیمان کے اسپیکر نبیہ بری سمیت تمام حکمران اشرافیہ سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا تھا اورملک گیر احتجاجی مظاہروں کے بعد وزیراعظم سعدالحریری اکتوبر کے آخر میں اپنے عہدے سے مستعفی ہوگئے تھے لیکن صدر میشیل عون نے ان کے مطالبے پر اپنا عہدہ چھوڑنے سے انکار کردیا تھا اور کہا تھا کہ مظاہرے ان کے خلاف نہیں بلکہ کرپشن کے خلاف کیے جارہے ہیں۔