.

سعودی عرب: العلا کی تاریخی سرزمین پر موسم سرما کا "طنطورہ میلہ"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں موسم سرما کے خصوصی میلے طنطورہ (Winter at Tantora Festival) کا دوسرا سیزن جمعرات کے روز شروع ہو گیا۔ سعودی عرب کے مغربی ضلع العلا میں ثقافت، قومی ورثے اور فن سے متعلق نمایاں ترین سرگرمی شمار کیا جانے والا یہ میلہ رواں سال 19 دسمبر سے آئندہ برس 7 مارچ 2020 تک جاری رہے گا۔

آئندہ 12 ہفتوں کے دوران طنطورہ میلے میں بھرپور سرگرمیاں دیکھنے میں آئیں گی۔ یہ سرگرمیاں مشرقی اور مغربی ثقافتوں کے ملاپ کا مظہر ہوں گی۔ اس دوران میلے میں آنے والوں کے سامنے العلا کے تہذیبی ورثے اور اس کے تاریخی امتیاز کو پیش کیا جائے گا کیوں کہ العلا تاریخ میں دنیا کے مختلف حصوں کی ثقافتوں اور تہذیبوں کے سنگم کا مقام رہا ہے۔

میلے کے دوران "مرايا" کے تھیٹر میں مختلف سرگرمیاں پیش کی جائیں گی۔ یہ تھیٹر جدید تعمیری فن کا ایک شاہ کار ہے جس میں 500 کے قریب افراد کی گنجائش ہے۔ اس کا جدید ترین صوتی نظام انتہائی اعلی کوالٹی کا حامل ہے اور اس تھیٹر کو عالمی سطح پر فن کی کسی بھی محفل کے انعقاد کے قابل بناتا ہے۔

العلا ضلع سے متعلق رائل اتھارٹی کے چیف ایگزیکٹو عمرو مدنی کا کہنا ہے کہ طنطورہ کا موسم سرما کا میلہ یہاں آنے والوں کو دنیا میں آثار قدیمہ سے متعلق نمایاں ترین مقامات سے لطف اندوز ہونے کا موقع فراہم کرے گا۔ العلا کے ان تاریخی مقامات کو اکتوبر 2020 میں باقاعدہ طور پر سیاحوں کے لیے کھول دیا جائے گا۔ میلے میں آنے والوں کو العلا کے تاریخی مقامات کے بارے میں بھرپور اور درست معلومات حاصل ہوں گی۔ جی ہاں العلا کا مقام جو ہزاروں برس کے دوران دنیا بھر کے مختلف علاقوں کی ثقافتوں اور تہذیبوں کا سنگم رھا۔

عمرو مدنی نے مزید بتایا کہ میلے میں آنے والے منفرد طریقے سے تہذیبوں کی اس سرزمین کے جمال سے لطف اندوز ہو سکیں گے۔ اس لیے کہ یہ لوگ گیس کے غباروں یا کلاسیکل طیاروں پر سوار ہو کر آسمان سے ان سحر انگیز قدرتی مناظر اور العلا کے آثار قدیمہ کے مقامات کا مشاہدہ کریں گے۔ اس کے علاوہ فور وہیل ڈرائیو لینڈ روور گاڑیوں کے ذریعے قدرتی وادیوں کے درمیان سفر کرنے کا بھی انتظام ہو گا۔

سعودی عرب کا یہ اہم میلہ العلا میں واقع ایک قدیم دھوپ گھڑی "الطنطورہ" کے نزدیک منعقد ہوتا ہے۔ اسی وجہ سے اس میلے کو طنطورہ وِنٹر فیسٹول کا نام دیا گیا۔ میلے کے دوران العلا کے مقامی لوگوں میں تریبت یافتہ افراد آنے والوں کے لیے سیاحتی رہ نما (گائیڈ) کی ذمے داری انجام دیں گے اور تہذیبوں کی اس سرزمین کا تاریخی پس منظر بیان کریں گے۔ مذکورہ افراد کو رہ نمائی کے شعبے سے متعلق ماہرین کے ذریعے فرانس، امریکا اور متحدہ عرب امارات میں خصوصی تربیت دلوائی گئی۔

طنطورہ میلے میں العلا کے مقامی مکینوں میں سے پکوان کے ماہر 24 نوجوان مرد اور خواتین دنیا کی مشہور ڈشز تیار کریں گے۔ سینئر عالمی ماہرین پکوان کے زیر نگرانی یہ سرگرمی العلا میں پکوان کی ثقافت اور عالمی پکوان کی ثقافت کا حسین امتزاج ہو گا۔

طنطورہ سیزن کے سلسلے میں 100 سے زیادہ مرد اور خواتین پر مشتمل ٹیم نے العلا کے تاریخی اور آثار قدیمہ کے مقامات کو آنے والوں کے استقبال کے واسطے تیار کیا ہے۔

دوسری جانب رائل اتھارٹی نے العلا کے ایئرپورٹ کے انفرا اسٹرکچر کو جدید بنانے کا کام مکمل کر لیا ہے۔ اس طرح اب مذکورہ ایئرپورٹ پر مسافروں کی گنجائش چار گنا اضافے کے بعد سالانہ 4 لاکھ تک پہنچ گئی ہے۔ علاوہ ازیں صحرائی تفریحی مقامات پر رہائشی یونٹوں کی تعداد میں بھی خاطر خواہ ضافہ کیا گیا ہے تا کہ موسم سرما کے "طنطورہ میلے" میں آنے والوں کے تجربے کو دل چسپ اور یادگار بنایا جا سکے۔