سعودی عرب میں سرکاری ملازمین کو نجی شعبے میں کام کی اجازت دینے پرغور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے وزیر برائے سول سروس سلیمان الحمدان نے کہا ہے کہ وزارت کی خواہش ہے کہ سرکاری ملازمین کو نجی شعبے میں کام کرنے کی اجازت دی جائے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سلیمان الحمدان نے مُملکت کے ویژن 2030ء کی روشنی میں آنے والے مرحلے میں وزارت کے نظریات، سمتوں اور اہداف کے بارے میں شوریٰ کونسل کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ سرکاری اداروں کو کسی بھی وقت اپنے ملازمین کو ترقیاں دینے کا حق حاصل ہے اور ہم انہیں سال میں دو بار ترقی تک محدود نہیں کرتے۔

سعودی وزیر نے مزید کہا کہ وزارت سول سروس نے حال ہی میں منظور شدہ تعلیمی ملازمتوں کی فہرست پر کام مکمل کر لیا ہے۔ ہم وزارت صحت اور اس کے متعلقہ اداروں کی مدد سے اس شعبے میں ملازمتوں کی فہرست کو حتمی شکل دے رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مختلف وزارتوں میں کام کو آسان بنانے اور اس حوالے سے منفی رحجانات کے خاتمے کے لیے 16 فہرستوں، اصولوں اور فیصلوں کو یکجا کیا گیا ہے۔ حکومت سرکاری محکموں میں خواتین کو با اختیار بنانے کے لیے موثر اقدامات کررہی ہے۔

سلیمان الحمدان کا کہنا تھا کہ سعودی عرب میں معذور اور خصوصی افراد کے لیے تمام محکموں میں وزارتوں کا کوٹہ موجود ہے۔ اس حوالے سے ہم وزارت برائے سماجی بہبود کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں تاکہ معذور افراد کو ترجیحی بنیادوں پر ملازمتوں میں حصہ دیا جا سکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں