.

عراق: وسطی بغداد میں کامیڈی فن کار پرقاتلانہ حملہ ناکام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں جاری پرتشدد مظاہروں کے دوران سماجی کارکنوں اور فن کاروں پربھی حملے ہو رہے ہیں۔ تازہ اطلاعات کے مطابق کل منگل کے روز وسطی بغداد میں نامعلوم مسلح افراد کے ایک گروپ نے طربیہ فن کار اوس فاضل پرقاتلانہ حملہ کیا تاہم وہ اس حملے میں محفوظ رہے۔

یہ حملہ ایک ایسے وقت میں کیا گیا ہے جب حالیہ عرصے کے دوران عوامی احتجاج کی حمایت کرنے والے سماجی کارکنوں پر نامعلوم افراد کی طرف سے ایسے کئی مہلک حملے کیے جا چکے ہیں جن میں کئی اہم شخصیات کوموت کے گھاٹ اتار دیا گیا۔

اوس فاضل عراق کے سینیر کامیڈی فن کار سمجھے جاتےہیں۔ ان کا تعلق بطیخ کے علاقے سے ہے اور وہ بھی ملک میں مسلح ملیشیائوں، اسلحے کی بھرمار اور حکومتی عہدیداروں میں پائی جانے والی کرپشن پر تنقید کرنے والوں میں شامل ہیں۔

ادھراقوام متحدہ کی طرف سے جاری ایک انتباہی بیان میں خبردارکیا گیا ہے کہ عراق میں جاری پرتشدد احتجاج کے دوران حکومت مخالف شخصیات پرقاتلانہ حملوں میں اضافہ ہوسکتا ہے۔ اقوام متحدہ نے احتجاج کی حمایت اور حکومتی کرپشن پرتنقید کرنے والے شہریوں پرحملوں کو عالمی قوانین اور انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی قرا ردیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ عراق میں جاری احتجاج کے دوران حکومت کے ناقدین کے اغواء اور قتل کے واقعات میں اضافہ تشویش ناک ہےاور اس طرح کے واقعات میں مزید اضافہ ہوسکتا ہے۔