.

ایرانی پاسداران انقلاب کا القدس فورس کے سربراہ قاسم سلیمانی کی ہلاکت کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی پاسداران انقلاب نے آج جمعے کے روز اعلان کیا ہے کہ اس کی ذیلی تنظیم القدس فورس کا سربراہ قاسم سلیمانی امریکی بم باری میں ہلاک ہو گیا ،،، سلیمانی کی گاڑی کو بغداد کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر نشانہ بنایا گیا۔

ادھر عراقی ملیشیا الحشد الشعبی کے ترجمان احمد الاسدی نے بھی بغداد کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے قریب ایک گاڑی پر بم باری کے نتیجے میں القدس فورس کے سربراہ قاسم سلیمانی اور الحشد الشعبی کے اہم رہ نما ابو مہدی المہندس کے مارے جانے کی تصدیق کی ہے۔ اس سے قبل عراق کے سرکاری ٹی وی نے دونوں شخصیات کی ہلاکت کی خبر دی تھی۔ سلیمانی اور ابو مہدی کی لاشوں کی باقیات کو بغداد کے المثنی ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

الاسدی نے امریکا اور اسرائیل پر الزام عائد کیا کہ سلیمانی اور المہندس کے قتل کے پیچھے امریکا اور اسرائیل کا ہاتھ ہے۔

تفصیلات کے مطابق اس آپریشن کا آغاز جمعے کو علی الصبح ہوا اس وقت ہوا جب ایرانی پاسداران انقلاب کے بعض رہ نما الحشد الشعبی ملیشیا کے متعدد رہ نماؤں اور ارکان کے ساتھ بغداد کے ہوائی اڈے سے باہر نکل رہے تھے۔ اس دوران جنوبی مرکزی دروازے کی جانب موجود ان افراد کو امریکی طیاروں کے ذریعے نشانہ بنایا گیا۔

بعد ازاں اس مقام کو راکٹ حملے کا نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں کئی افراد ہلاک ہو گئے۔ ہلاک ہونے والوں میں القدس فورس کا سربراہ قاسم سلیمانی، الحشد الشعبی ملیشیا میں دوسرا اہم ترین شخص ابو مہدی المہندس، ملیشیا میں تعلقات عامہ کا ذمے دار محمد رضا الجابری اور ملیشیا میں گاڑیوں کے امور کا ذمے دار حیدر علی وغیرہ شامل ہیں۔

اسی طرح متعدد کٹی پھٹی لاشیں ہیں جن کی ابھی تک شناخت نہیں ہو سکی۔

دوسری جانب اس طرح کی نیم مصدقہ خبریں بھی موصول ہوئی ہیں کہ حملے میں لبنانی حزب اللہ کا رہ نما محمد الکوثرانی اور حزب اللہ میں عراق کے امور کا ذمے دار بھی مارا گیا ہے۔

بغداد کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر یہ کارروائی ،،، بغداد میں امریکی سفارت خانے پر الحشد الشعبی ملیشیا کے حملے کے دو روز بعد سامنے آئی ہے۔

عراقی سرکاری ٹی وی نے جمعے کی صبح سب سے پہلے بغداد کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر الحشد الشعبی کے نائب سربراہ ابو مہدی المہندس اور القدس فورس کے سربراہ قاسم سلیمانی کی ہلاکت کا اعلان کیا۔ ان دونوں افراد کی گاڑی کو بم باری کا نشانہ بنایا گیا۔

الحشد الشعبی ملیشیا نے جمعے کی صبح اعلان کیا کہ بغداد کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر دو گاڑیوں کو راکٹوں کے ذریعے نشانہ بنایا گیا۔ اس کے نتیجے میں ملیشیا کے رہ نماؤں سمیت 5 ارکان اور 2 اہم مہمان اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے۔

ادھر عراقی فوج نے بغداد کے ہوائی اڈے پر عراقی عسکری تنصیبات اور بین الاقوامی اتحاد کی تنصیبات کے نزدیک متعدد راکٹوں کے گرنے کا اعلان کیا ہے۔

مزید تفصیلات آ رہی ہیں