.

حماس کے سربراہ اسماعیل ہنئیہ کی’’القدس کے شہید‘‘ قاسم سلیمانی کی نمازِ جنازہ میں شرکت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطین کے مزاحمتی گروپ حماس کے سربراہ اسماعیل ہنئیہ نے سوموار کے روز تہران میں ایران کے مقتول میجر جنرل قاسم سلیمانی کی نمازِ جنازہ میں شرکت کی ہے۔

اس موقع پر انھوں نے ایرانی سوگواروں سے خطاب کرتے ہوئے میجر جنرل قاسم سلیمانی کو ’’القدس کا شہید‘‘ قراردیا ہے۔انھوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ حماس سمیت فلسطینی مزاحمت گروپ صہیونی منصوبے اور امریکی اثرونفوذ سے مقابلے کے لیے سلیمانی کے نقشِ قدم پر چلیں گے۔

اسماعیل ہنئیہ نے اچانک ایران کا یہ دورہ کیا ہے۔عرب اور اسرائیلی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق مصر نے دسمبر میں انھیں علاقائی دورے کی اجازت دی تھی اور یہ 2017ء میں حماس کا سربراہ بننے کے بعد ان کا پہلا غیرملکی دورہ ہے مگر مصر نے یہ شرط عاید کی تھی کہ وہ ایران نہیں جائیں گے۔

ایران کی سپاہ پاسداران انقلاب کی القدس فورس کے کمانڈر میجر جنرل قاسم سلیمانی اور عراقی ملیشیاؤں پر مشتمل الحشد الشعبی کے ڈپٹی کمانڈر ابو مہدی المہندس گذشتہ جمعہ کو بغداد کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے نزدیک گاڑیوں کے ایک قافلے پر امریکا کے ڈرون حملے میں مارے گئے تھے۔ان کی نمازجنازہ تہران میں ادا کی گئی ہے۔اس کی امامت ایران کے رہبرِ اعلیٰ آیت اللہ علی خامنہ ای نے کی ہے۔اس دوران میں وہ اشکبار ہوگئے تھے اور شرکاء بھی آہ وبکا کررہے تھے۔