.

'الطنطورہ' سرما سیزن کے زائرین 'العلا' سے کیوں متاثر ہوئے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں موسم سرما کے خصوصی میلے طنطورہ (Winter at Tantora Festival) کا دوسرا سیزن پورے جوش وخراش سے جاری ہے اور اس میلے میں اندرون اور بیرون ملک سے زائرین جوق درجوق شرکت کررہے ہیں۔ سعودی عرب کے مغربی ضلع العلا میں ثقافت، قومی ورثے اور فن سے متعلق نمایاں ترین سرگرمی شمار کیا جانے والا یہ میلہ رواں سال 19 دسمبر کو شروع ہوا جو آئندہ برس 7 مارچ 2020 تک جاری رہے گا۔

آئندہ دو ماہ میں طنطورہ میلے میں بھرپور سرگرمیاں دیکھنے میں آئیں گی۔ یہ سرگرمیاں مشرقی اور مغربی ثقافتوں کے ملاپ کا مظہر ہوں گی۔ اس دوران میلے میں آنے والوں کے سامنے العلا کے تہذیبی ورثے اور اس کے تاریخی امتیاز کو پیش کیا جائے گا کیوں کہ العلا تاریخ میں دنیا کے مختلف حصوں کی ثقافتوں اور تہذیبوں کےلیے سنگم کا مقام رہا ہے۔

اس میلے نے العلاء کو دنیا کےسامنےایک بارپھر کھول دیا ہے۔ زائرین العلا کے دورے کے دوران اس کی تاریخ، ثقافت، قدیم تہذیبوں کے کھنڈرات اور اس کی قدرتی خوبصورتی میں کھو جاتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ طنطورہ میلے کے شرکاء العلاء سے بے حد متاثر ہیں۔

العلاء اپنے قیمتی تاریخی مقامات کی وجہ سے شہرت رکھنے کے بعد منفرد قدرتی مقامات اور متنوع معالم و آثار کی وجہ سے بھی اپنی مثال آپ ہے۔

سعودی عرب کی سرکاری پریس ایجنسی 'ایس پی اے' کے مطابق العلاء کی رائل اتھارٹی طنطورہ سرما سیزن کے دوران العلاء کو زائرین کے لیے کھول کر اس کی ثقافت، تاریخ، قدرتی حسن اور تہذیبی اہمیت دنیا کے سامنے واضح کردی ہے۔ یہاں کے قدیم وجدید علوم وفنون بھی اس کا وزٹ کرنے والوں کی دلچسپی کا مرکز ہیں۔

سیاح حضرات یہاں کے لوگوں کی مہم جوئی، فنی مہارتوں اور ثقافت واقتدار کے قصے سن بھی محظوظ ہوتے اور یہاں کے تاریخی اور قدرتی مقامات کی سیر میں بھی گہری دلچسپی لیتے ہیں۔

سعودی عرب کی حکومت نے طنطورہ میلے میں شرکت اور العلاء کی تاریخ وثقافت سے آگاہی کے لیے آن لائن سیاحتی ویزہ سروس شروع کرکے عالمی سیاحوں کے لیے مزید آسانی فراہم کی ہے۔ بیرون ملک سے کوئی بھی سیاح صرف چند منٹ میں آن لائن ویزہ حاصل کرسکتا ہے۔

یہاں آنےوالوں کی توجہ کا مرکز ویسے تو العلا کا ایک ایک گائوں اور قصبہ ہے مگر العلاء کے تاریخی باغات، تاریخی اہمیت کے حامل قصبے اور قدرتی مقامات زیادہ وزٹ کیے جا رہے ہیں۔ رائل اتھارٹی کی طرف سے سیاحوں کی سہولت کے لیے العلاء کے تاریخی اور قدرتی حسین مقامات کو الگ الگ تقسیم کیا گیا ہے۔

اقوام متحدہ کے ادارہ برائے سائنس وثقافت کے ریکارڈ میں عالمی ثقافتی ورثے کے طور پرشامل العلاء کی ثقافتی اور تاریخی اہمیت اجاگر کرنے کے لیے حکومتی سطح پرآگاہی مہم کے طورپر کانفرنسیں، فورمز اور دیگر تقریبات کا بھی انعقاد کیا جاتا ہے تاکہ عالمی سطح پر لوگ اس کے بارے میں زیاہ سے زیادہ جان کاری حاصل کرکے اس کی سیر سے لطف اندوز ہوسکیں۔

العلاء میں سیاحت کے فروغ کے لیے ترقیاتی منصوبوں پرکام بھی جاری ہے۔ زمانہ قدیم کے کھنڈرات کو معدوم ہونے سے بچانے کے لیے ان کے لیے حفاظتی انتظامات اور ماہرین کے ذریعے انہیں بچانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ یہاں کے حالات ، ماحول ، موسم اور سیاحوں کی ضروریات کے لیے ہوٹل بھی قائم کیےگئے ہیں جب کہ بیرون ملک سے آنے والے سیاحوں کے لیے یہاں پر متعدد شاپنگ مراکز کےقیام پربھی کام جاری ہے۔