عراق : کربلا میں جھڑپوں میں 10 مظاہرین زخمی ، بدر تنظیم کا صدر دفتر نذر آتش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

عراق کے شہر کربلا میں محکمہ صحت کے طبی ذرائع نے العربیہ اور الحدث نیوز چینلوں کے نمائندے کو بتایا ہے کہ کربلا شہر کے وسطی علاقے میں ہنگامہ آرائی کے انسداد کی فورس کے ساتھ جھڑپوں میں 10 مظاہرین زخمی ہو گئے۔

عراقی نیوز ایجنسی کے مطابق سیکورٹی فورسز کربلا کی صوبائی کونسل کی عمارت پر دھاوا بولنے والے مظاہرین کو دور کرنے کی کوشش کر رہی ہیں۔ ادھر نامعلوم افراد نے کربلا میں بدر تنظیم کے صدر دفتر کو آگ لگا دی۔ اس دوران کربلا میں امن و امان کی صورت حل کافی خراب ہو چکی ہے جب کہ مظاہرین اور سیکورٹی فورسز کے بیچ جھڑپوں میں بھی شدت آئی ہے۔

العربیہ اور الحدث کے ذرائع کے مطابق شہری دفاع کی ٹیمیں آگ بجھانے کے واسطے جائے وقوع پر پہنچ گئیں۔

عراق کے مختلف علاقوں میں عوامی احتجاج کا سلسلہ جاری ہے۔ ان میں ذی قار صوبے کا شہر ناصریہ اور واسط صوبے کا شہر کوت بھی شامل ہے۔ کوت میں واسط یونیورسٹی کے نزدیک جھڑپوں میں 59 افراد زخمی ہو گئے جن میں 48 پولیس اہل کار ہیں۔ مظاہرین اور سیکورٹی فورسز کے درمیان جھڑپوں کے بعد یونیورسٹی کو بند کر دیا گیا۔

اسی طرح نجف میں بھی مختلف یونیورسٹیز میں ہزاروں طلبہ نے پڑھائی کا سلسلہ معطل کر دیا۔ ذی قار صوبے میں انارکی اور شورش کے سبب پولیس سربراہ کو عہدے سے برطرف کر دیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں