.

یمنی دارالحکومت کے شمال میں 80 حوثی جنگجو ہلاک اور 100 قید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں العربیہ اور الحدث نیوز چینلوں کے ذرائع کے مطابق دارالحکومت صنعاء کے شمال مشرق میں نہم کے محاذ پر جھڑپوں کے دوران 80 حوثی باغی ہلاک ہو گئے۔ اس دوران 100 حوثیوں کو قیدی بھی بنا لیا گیا۔

عکسری ذرائع نے واضح کیا کہ نہم کے محاذ پر یمن کی قومی فوج اور حوثی ملیشیا کے بیچ گھمسان کی لڑائی ہوئی۔

اس دوران یمنی فوج جبل البیاض کو مکمل طور پر واپس لینے اور تبہ الکحل پر کنٹرول حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئی۔ جھڑپوں کا سلسلہ بدستور جاری ہے۔ معلومات کے مطابق تبہ الصافح کا کنٹرول واپس لینے کے لیے یمنی فوج کی پیش قدمی کا سلسلہ ابھی جاری ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ حوثی ملیشیا کے ارکان نے بڑی تعداد میں جمع ہو کر جبلِ ہیلان کے تزویراتی مقام سے چکر کاٹ کر دارالحکومت صنعاء کی سمت آنے والے راستے کو بند کرنے کی کوشش کی۔ تاہم یمنی فوج نے حوثی ملیشیا کے ارکان کا محاصرہ کر لیا۔ اس دوران فریقین کے بیچ مختلف نوعیت کے درمیانے اور بھاری ہتھیاروں سے شدید جھڑپیں ہوئیں۔ اس کے نتیجے میں حوثی باغیوں کا بھاری جانی اور مادی نقصان ہوا۔

دوسری جانب عرب اتحاد کے لڑاکا طیاروں نے نہم ضلع اور خولان الطیال میں حوثیوں کے جتھوں کو فضائی حملوں کا نشانہ بنایا۔

زمینی ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ یمنی فوج کی جانب سے نہم کے محاذ پر حریب کے علاقے میں حوثی باغیوں پر حملہ کیا گیا۔ اس دوران ایک حوثی کمانڈر ابو ثابت الہاشمی اور اس کے 13 ساتھ مارے گئے۔

واضح رہے کہ یمنی فوج نے اتحادی فورسز کی معاونت سے گذشتہ دو روز کے دوران نہم ضلع میں ضبوعہ کے علاقے کے اطراف حوثیوں کے ٹھکانوں پر کنٹرول حاصل کرنے کے لیے وسیع پیمانے پر حملے کیے۔ اس کے نتیجے میں درجنوں حوثی جنگجو ہلاک اور زخمی ہو گئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں