.

جازان میں ساتویں سالانہ کافی میلے کی رنگا رنگ تقریبات جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے جنوبی مغرب علاقے جازان میں مسلسل چھ سالانہ 'کافی میلوں' کے انعقاد کے بعد میلے کا ساتواں سالانہ ایڈینشن الدائر بنی مالک گورنری میں آج جمعرات کو شروع ہو رہا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق کافی میلے میں مختلف نوعیت کی 25 رنگا رنگ تقریبات اورتفریحی سرگرمیاں منعقد کی جائیں گی۔

اس بار ہونے والا سالانہ کافی میلہ ماضی کے میلوں کی نسبت کافی وسیع ہے جس میں کافی کے پودے کی شجرکاری کے شعبے میں سرمایہ کاری اور کافی کے معیار کو زیادہ بہتربنانے پر توجہ مرکوز کی جائے گی۔

سعودی عرب میں میں کافی میلے کے انعقاد کا مقصد دنیا بھرمیں اس شعبے کو درپیش مشکلات اور سعودی عرب کے پہاڑی علاقے میں کافی کے پودوں کی شجر کاری کی اہمیت کو اجاگر کرنا ہے۔

سعودی عرب کی وزارت تحفظ ماحولیات و زراعت کے زیراہتمام ہونے والے اس میلے میں اس بار'ویژن 2030ء' کے خطوط پر منعقد کیا جا رہا ہے۔ تاکہ قدرتی وسائل کو متوازن اقتصادی اور سماجی ترقی کے لیے استعمال کرنے کے ساتھ زراعت کے شعبے کو فروغ دے کر مقامی آبادی کو اس سے زیادہ سے زیادہ مستفید ہونے کا موقع فراہم کیا جاسکے۔

سعودی عرب مملکت میں کافی کی شجر کاری،اس کی پیدوار کوبہتربنانے اور اور معیار کو عالمی سطح پر لانے کے ساتھ 2025ء تک اس کی سالانہ پیداوار کو سالانہ 7 ٹن تک پہنچانا ہے۔

سعودی عرب کے جنوب مغربی علاقے الدائر، ھروب، العارضہ، فیفا، العیدانی اور الریث میں دو لاکھ قابل کاشت پودے موجود ہیں۔

حکومت کی طرف سے سنہ 2030ء تک جنوبی سعودی عرب میں کافی کی درختوں کی تعداد ایک ملین تک پہنچانا ہے۔

آئندہ ایک سال کے دوران کافی کی نئی شجرکاری کے تحت غیر پھل دار پودوں کی تعداد میں 70 فی صد اضافہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔