.

شام میں گھمسان کی لڑائی، بشار کی فورسز کے 54 اور اپوزیشن کے 40 ارکان ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں انسانی حقوق کے نگراں گروپ المرصد نے تصدیق کی ہے کہ گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران حلب اور ادلب کے دیہی علاقوں میں شامی اپوزیشن گروپوں کے ساتھ شدید لڑائی میں بشار کی فوج اور اس کی ہمنوا مسلح ملیشیاؤں کے 54 سے زیادہ ارکان مارے گئے۔ اس دوران تقریبا 40 جنگجو بھی اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے جن میں 29 کا تعلق اپوزیشن گروپوں سے ہے۔

المرصد کے مطابق جھڑپوں کے دوران روسی طیاروں نے خان العسل، المنصورہ، کفر حمرہ، خان طومان، الفوج 46 اور اورم الکبری کے علاقوں میں شدید بم باری کی۔

ادلب کے مشرق اور جنوب مشرق میں بھی فریقین کے درمیان شدید جھڑپیں جاری رہیں۔ اس دوران شامی اپوزیشن گروپوں نے بشار کی فوج کی جانب سے پیش قدمی کی 6 سے زیادہ کوششیں پسپا کر دیں۔ بشار کی فوج کا جانی نقصان ہوا جب کہ اس کے کم از کم 3 ارکان کو قیدی بنا لیا گیا۔

یاد رہے کہ تازہ ترین جانی نقصان کے بعد 24 جنوری کی شام سے جاری فضائی بم باری اور زمینی جھڑپوں میں اب تک بشار کی فوج کے 233 اور اس کی ہمنوا ایران نواز غیر ملکی ملیشیاؤں کے 6 جنگجو مارے جا چکے ہیں۔ اس کے مقابل ہلاک ہونے والے بشار مخالف جنگجوؤں کی مجموعی تعداد 240 تک پہنچ گئی ہے۔ ان میں 179 کا تعلق شامی اپوزیشن گروپوں سے ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں