.

عراقی صدر کی محمد توفیق علاوی کو وزیراعظم نامزد کرکے نئی حکومت بنانے کی دعوت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے صدر برہم صالح نے محمد توفیق علاوی کو نیا وزیراعظم نامزد کرکے حکومت بنانے کی دعوت دی ہے۔

محمد توفیق علاوی سابق وزیراعظم نوری المالکی کی حکومت میں وزیر مواصلات رہے تھے۔ تین عراقی عہدے داروں کے مطابق متحارب سیاسی دھڑوں نے کئی ہفتے کے غوروخوض کے بعد علاوی کو ہفتے کے روز وزیراعظم نامزد کیا ہے۔اب وہ ایک ماہ میں نئی کابینہ تشکیل دینے کے پابند ہیں۔

عراق کے نامزد وزیراعظم دارالحکومت بغداد میں پیدا ہوئے تھے۔ ان کی عمر چھیاسٹھ سال ہے ۔ وہ ماضی میں دو مرتبہ وزیر مواصلات کے منصب پر فائز رہے تھے۔انھیں 2006ء میں پہلی مرتبہ مواصلات کی وزارت کا قلم دان سونپا گیا تھا۔اس کے بعد وہ 2010ء سے 2012ء تک دوبارہ اسی منصب پر فائز رہے تھے لیکن سابق وزیراعظم نوری المالکی سے تنازع کے بعد اپنے عہدے سے مستعفی ہوگئے تھے۔

عراق کے نامزد وزیراعظم محمد توفیق علاوی
عراق کے نامزد وزیراعظم محمد توفیق علاوی

انھوں نے آن لائن پوسٹ کیے گئے پہلے سے ریکارڈ بیان میں مظاہرین پر زور دیا ہے کہ وہ کرپشن کے خلاف اپنی احتجاجی تحریک جاری رکھیں۔انھوں نے خبردار کیا ہے کہ اگر بلاکوں نے کابینہ میں اپنے وزراء شامل کرنے پر اصرار کیا تو وہ عہدہ چھوڑ دیں گے۔

انھوں نے مظاہرین سے مخاطب ہوکر کہا:’’ اگر یہ آپ کی قربانیاں نہیں ہوتیں اور آپ دلیری نہیں دکھاتے تو پھر ملک میں کوئی تبدیلی بھی نہیں آتی۔مجھے آپ پر یقین ہے اور آپ اپنا احتجاج جاری رکھیں۔‘‘

واضح رہے کہ عراقی صدر برہم صالح نے گذشتہ بدھ کو یہ دھمکی دی تھی کہ اگر سیاسی بلاک تین روز میں(یکم فروری تک) وزیراعظم کے لیے کسی نام پر متفق نہیں ہوتے تو وہ اپنے آئینی اختیارات کو بروئے کار لاتے ہوئے خود ہی پارلیمان اور عوام کے لیے قابل قبول شخصیت کو وزیراعظم نامزد کردیں گے۔

عراق میں اکتوبر سے جاری احتجاجی مظاہروں کے بعد وزیراعظم عادل عبدالمہدی دسمبر میں مستعفی ہوگئے تھے لیکن وہ اب نگران وزیراعظم کے طور پر امورِ حکومت چلارہے ہیں۔ اس دوران میں سیاسی جماعتوں کے درمیان کسی نئے وزیراعظم کے نام پر اتفاق رائے نہیں ہوسکا تھا۔

عراق کے آئین کے مطابق پارلیمان میں سب سے زیادہ نشستوں کا حامل بلاک انتخابات کے بعد پندرہ روز میں اپنا وزیراعظم نامزد کرنے کا پابند ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں