.

فلسطینی قوم کے ساتھ یک جہتی کا مطالبہ کرتے ہیں : سعودی وزیر خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان بن عبداللہ نے فلسطینی قوم اور اس کے منصفانہ معاملے کے ساتھ یک جہتی کا مطالبہ کیا ہے۔

جدہ میں پیر کے روز اسلامی تعاون تنظیم OIC کے ہنگامی اجلاس سے خطاب میں انہوں نے فلسطینیوں کے حقوق کے ساتھ یک جہتی کے اظہار پر زور دیا۔

اس دوران متحدہ عرب امارات کے وزیر مملکت برائے خارجہ امور انور قرقاش نے باور کرایا کہ مسئلہ فلسطین اور فلسطینی قوم کے قانونی حقوق کے لیے امارات کی تاریخی سپورٹ جاری رہی گی۔

اسلامی تعاون تنظیم کے وزراء خارجہ کا اجلاس پیر کے روز جدہ میں منعقد ہوا۔ اجلاس کا مقصد گذشتہ ہفتے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے اعلان کردہ مشرق وسطی امن منصوبے کے حوالے سے OIC کے موقف کو زیر بحث لانا تھا۔

یاد رہے کہ دو روز قبل قاہرہ میں عرب لیگ کے وزراء خارجہ کا اجلاس منعقد ہوا تھا۔ اجلاس کے شرکاء نے ٹرمپ منصوبے کو مسترد کرتے ہوئے فلسطینی قوم کے حقوق سے دست بردار نہ ہونے کے موقف پر ڈٹے رہنے کا اعلان کیا۔ تنظیم آزادی فلسطین PLO کی مجلس عاملہ کے سکریٹری جنرل ڈاکٹر صائب عریقات نے اس موقف کو گراں قدر قرار دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ "فلسطینی قیادت کے موقف پر عرب ممالک کا اجماع ایک عظیم کامیابی ہے"۔

واضح رہے کہ سعودی عرب نے گذشتہ ہفتے اس موقف کو دہرایا تھا کہ وہ مسئلہ فلسطین کے ایک منصفانہ اور جامع حل کے لیے حالیہ تمام کوششوں کی حمایت کرتا ہے۔ سعودی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں واشنگٹن کے زیر سرپرستی فلسطینیوں اور اسرائیلیوں کے درمیان براہ راست امن مذاکرات کے آغاز کو سراہا گیا۔