.

چین سے لوٹنے والے سعودی طلبہ کرونا وائرس سے محفوظ ہیں: وزارت صحت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی وزارت صحت نے کہا ہے کہ چین سے لوٹنے والے دس سعودی طلبہ کے ابتدائی لیبارٹری ٹیسٹ کے نتائج منفی آئے ہیں۔اس کا مطلب ہے کہ وہ کرونا وائرس سے متاثر نہیں ہیں۔

خیال رہے کہ سعودی ایئر لائن نے چین کے شہر "گوانگزو" کے لیے پروازیں معطل کرنے کا اعلان کیا تھا اور اتوار کو چین کے کرونا سے متاثرہ شہر ووہان سے 10 سعودی طلبہ کو وطن واپس لایا گیا تھا۔ وطن واپسی پر ان کا طبی معائنہ کیا گیا تاہم طبی تجربات سے معلوم ہوا ہے کہ وہ کرونا وائرس سے محفوظ ہیں۔

سعودی عرب واپس آنے اور کرونا وائرس کا شکار نہ ہونے والے ان طلبہ کو احتیاطی تدابیر کے تحت اسپتال میں رکھا جائے گا تاکہ ان کی صحت کی مزید جانچ پڑتال کی جاسکے اور کرونا وائرس کی موجودگی کی صورت میں دوسرے لوگوں تک اس کے پھیلاؤ کو روکا جا سکے۔ سعودی عرب کی ایک طبی ٹیم ان طلبہ کی دیکھ بھال کررہی ہے۔

دریں اثناء سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے ووہان سے دس طلبہ کو نکالنے میں مدد فراہم کرنے پر چینی حکام کا شکریہ ادا کیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ووہان میں پھنسے طلبہ کو خصوصی پرواز کے ذریعے وہاں سے نکالنے کے لیے چین نے سعودی عرب کے ساتھ مکمل تعاون کیا ہے۔

قبل ازیں سعودی عرب کے وزیر صحت ڈاکٹر توفیق الربیعہ نے کہا تھا کہ مملکت میں کرونا وائرس کا کوئی کیس سامنے نہیں آیا ہے۔ تاہم ان کا کہنا تھا کہ مملکت کےشہریوں کو کرونا وائرس سے محفوظ رکھنے کے لیے ضروری احتیاطی تدابیر اختیار کی جا رہی ہیں۔