.

متحدہ عرب امارات: کرونا وائرس کے 2 نئے کیسوں کا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات میں وزارت صحت نے ہفتے کے روز ایک اعلان میں بتایا ہے کہ کرونا وائرس کے دو مزید کیس سامنے آئے ہیں۔ اس طرح امارات میں کرونا کے ظاہر ہونے کے بعد سے اس وائرس میں مبتلا ہونے والے افراد کی مجموعی تعداد سات ہو گئی ہے۔

وزارت صحت کے بیان کے مطابق دو نئے متاثرہ افراد کا تعلق چین اور فلپائن سے ہے۔ دونوں افراد کو عالمی معیار کے مطابق مطلوب کڑی طبی نگرانی میں رکھا گیا ہے۔ وزارت کا کہنا ہے کہ وہ ریاست کے تمام سیکٹروں کے ساتھ رابطہ کاری سے کام کر رہی ہے تا کہ شہریوں اور مقیمین کی سلامتی کو یقینی بنانے کے واسطے تمام تر احتیاطی اقدامات کیے جا سکیں۔

متحدہ عرب امارات میں 29 جنوری کو کرونا کا پہلا کیس ریکارڈ ہونے کا اعلان کیا گیا تھا۔ اس موقع پر بتایا گیا کہ ایک ہی خاندان کے چار افراد اس مہلک وائرس سے متاثر ہوئے ہیں۔ یہ خاندان سیاحت کے مقصد سے چین کے شہر ووہان سے امارات پہنچا تھا۔ مزید یہ کہ چاروں افراد کی طبی حالت مستحکم ہے اور انہیں طبی نگرانی میں کھا گیا ہے۔

عالمی ادارہ صحت نے جمعے کے روز اعلان کیا تھا کہ دنیا بھر میں سائنس دان ابھی تک اس پھیلتے ہوئے وائرس کا علاج دریافت نہیں کر پائے ہیں۔

چین کے صوبے ہوبی کی صحت کمیٹی نے ہفتے کو اپنی ویب سائٹ پر جاری بیان میں اعلان کیا ہے کہ کرونا وائرس کے پھیلنے کے نتیجے میں ملک کے وسطی حصے میں ہلاکتوں کی تعداد 86 تک جا پہنچی ہے جب کہ جمعہ کی شام تک مجموعی طور پر 722 افراد اس مہلک وائرس کی بھینٹ چڑھ چکے ہیں۔

کرونا پھیلنے کے مرکزی علاقے ہوبی میں مزید 3399 کیسز سامنے آئے ہیں جس کے بعد اس وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد بڑھ کر 31 ہزار 774 ہوچکی ہے۔

عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل ٹیڈروس اذانم گبریوس نے اعلان کیا ہے کہ دنیا کو کرونا وائرس کے پھیلاؤ سے نمٹنے کے لیے کپڑوں، ماسک، دستانوں اور دیگر حفاظتی آلات کی کمی کا سامنا ہے۔