شام میں اسرائیلی فضائی حملے میں اہم ایرانی عہدیدار ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

شام میں اسرائیلی فوج نے ایک فضائی حملے میں حزب اللہ کے ساتھ کام کرنے والے ایک اہم ایرانی عہدیدار کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

العربیہ چینل کو ملنے والی اطلاعات کے مطابق اسد رجیم کی وفادار'ملٹری سیکیورٹی' برانچ میں بنیادی ڈھانچے کے پروگرام میں کام کرنے والے ایرانی عہدیدار عماد الطویل کو ایک فضائی حملے میں نشانہ بنا کر ہلاک کردیا گیا۔

شامی آبزرویٹری برائے ہیومن رائٹس کے ڈائریکٹر رامی عبد الرحمن نے 'اے ایف پی' کو بتایا کہ اسرائیلی ڈرون نے قنیطرہ گورنری میں واقع خضر نامی شہر کے جنوبی دروازے پر ایک کار کو نشانہ بنایا جس میں سوار شخص ہلاک ہوگیا۔

ایک باخبر فیلڈ ذرائع نےاسرائیلی بمباری کا نشانہ بننے والا شخص ایرانی تھا جس کی شناخت عماد الطویل کےنام سے کی گئی ہے اور وہ شام میں حزب اللہ کے ساتھ مل کر بنیادی ڈھانچے کے پروگرام میں کام کررہا تھا۔
جمعرات کے روز شامی حکومت کی خبر رساں ایجنسی نے بتایا کہ وادی گولان کے علاقے قنیطرہ میں اسرائیلی فضائی حملے میں ایک شخص مارا گیا۔ تاہم اسرائیل کی طرف سے اس واقعے کی مزید تفصیل بیان نہیں کی گئی۔

اسرائیلی میڈیا کے مطابق عماد الطویل شام میں ایران کے انفراسٹرکچر کا اہم الطویل ذمہ دار تھا۔ اس انفرااسٹرکچر کواسرائیلی اہداف پر حملوں کے لیے استعمال کیا جا رہا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں