.

ترک فوج کا حلب میں فوجی ہوائی اڈے پر حملہ، ادلب میں دو شامی طیارے مار گرائے!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترک فوج نے شام کے شمال مغربی صوبہ حلب میں واقع ایک فوجی ہوائی اڈے پر فضائی حملہ کیا ہے اور اس کو ناکارہ بنا دیا ہے ۔اس نے حلب کے پڑوس میں واقع صوبہ ادلب میں شامی فوج کے دو لڑاکا طیارے بھی مار گرائے ہیں۔

ترکی نے گذشتہ جمعرات کو شامی فوج کے فضائی حملے میں اپنے تیس سے زیادہ فوجیوں کی ہلاکت کے بعد جنگ زدہ ملک میں حملے تیز کردیے ہیں اور ان میں شامی صدر بشارالاسد کی وفادار فورسز کو نشانہ بنایا جارہا ہے۔

ترک فوج نے شام کے شمالی مغرب میں واقع ان دونوں صوبوں، حلب اور ادلب میں اسدی فوج کے خلاف آپریشن شروع کررکھا ہے اور اس نے اتوار کو ادلب میں شامی فوج کے دو لڑاکا طیارے بھی مار گرائے ہیں۔

برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق نے اطلاع دی ہے کہ ترک فوج نے ایف 16 لڑاکا طیاروں سے شام کے روسی ساختہ سخوئی جیٹ کو نشانہ بنایا ہے اور وہ دونوں شامی حکومت کے زیر قبضہ علاقے میں گر کر تباہ ہوگئے ہیں۔

ترکی کی وزارت دفاع نے بھی ان دونوں لڑاکا طیاروں کو مارگرانے کی اطلاع دی ہے لیکن یہ تصدیق نہیں کی ہے کہ انھیں کس طرح مار گرایا گیا ہے۔اس نے بیان میں کہا ہے کہ ’’ہمارے طیارے پر حملہ آور ہونے والے رجیم کے دو ایس یو 24 طیاروں کو مار گرایا گیا ہے۔‘‘

شام کی سرکاری خبررساں ایجنسی سانا نے بھی ملک کے شمال مغربی علاقے میں اپنے دو لڑاکا جیٹ کو نشانہ بنانے کی تصدیق کی ہے۔

شامی صدر بشارالاسد کی وفادار فورسز نے دسمبر سے روس کی حمایت سے باغیوں کے زیر قبضہ رہ جانے والے صوبہ ادلب کو سرنگوں کرنے کے لیے چڑھائی کررکھی ہے اور انھوں نے گذشتہ دو ماہ کے دوران میں اس صوبہ میں واقع بہت سے شہروں اور دیہات پر دوبارہ کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔

شامی رصدگاہ کے مطابق جمعہ کے بعد سے ترکی نے ڈرون اور توپ خانے سے جوابی حملے میں 74 شامی فوجیوں کو ہلاک کردیا ہے اور ان کے اتحادی 14 جنگجو بھی مارے گئے ہیں۔

دریں اثناء شامی فوج نے ادلب میں واقع شہر سراقب کے نزدیک ترک فوج کا ایک بغیر پائیلٹ طیارہ مار گرایا ہے۔سانا نے اس کی آن لائن فوٹیج جاری کی ہے۔اس میں شعلوں میں لپٹے ڈرون کو فضا سے زمین پر گرتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔شامی رصدگاہ نے بھی اس کی تصدیق کی ہے۔

شامی فوج نے خبردار کیا ہے کہ ملک کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کرنے والے کسی بھی طیارے کو مار گرایا جائے گا۔سانا نے ایک عسکری ذریعے کے حوالے سے کہا ہے کہ ’’ شامی فوج کی اعلیٰ کمان ملک کے شمال مغربی علاقے اور بالخصوص ادلب کے اوپر فضائی حدود کو طیاروں اور کسی بھی ڈرون کے لیے بند کرنے کا اعلان کرتی ہے۔ اب جو طیارہ بھی فضائی حدود کی خلاف ورزی کا مرتکب ہوگا،اس کو دشمن کا طیارہ سمجھاجائے گا اور مار گرایا جائے گا۔‘‘