.

ایران عالمی معائنہ کاروں کے کام میں رکاوٹ ڈال رہا ہے:IAEA

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی'آئی اےای اے' نے الزام عاید کیا ہے کہ ایران عالمی معائنہ کاروں کے سامنے ان کے پیشہ وارانہ امور کی انجام دہی رکاوٹیں ڈال رہا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق عالمی توانائی ایجنسی کی طرف سے ایران کے جوہری پروگرام کےحوالے سے' خطرے کی گھنٹی' بجائے جانے کے بعد متنازع ایرانی جوہری سرگرمیوں پر دوسری رپورٹ جاری کرنے کا اعلان کیا ہے۔ عالمی ایجنسی کا کہنا ہے کہ ایرانی جوہری پروگرام کا معاملہ خطرناک صورت حال اختیار کرتا جا رہا ہے۔

آئی اے ای اے کا کہنا ہے کہ اگر ایران اپنی ذمہ داریوں کو پورا نہیں کرتا ہے تو تو اس کا مطلب یہ ہے کہ تہران ہمارے کام میں مخل ہو رہا ہے۔

بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی کے ڈائریکٹر جنرل رافیل گروسی نے منگل کے روز کہا تھا کہ اگر ایران ایجنسی کے ساتھ تعاون نہیں کرتا ہے تو وہ ایک نئے بحران کے ابھرنےکا خطرہ مول لے گا۔ انہوں نے کہا کہ اگرایران 3 جوہری تنصیبات میں ایٹمی سرگرمیوں کے بارے میں اپنے سوالات کا جواب دینے میں ناکام رہا اور آئی اے ای اے کے معائنہ کاروں کو ان میں داخل ہونے کی اجازت دینے سے انکار کررہاہے تو یہ ہمارے کام میں کھلی مداخلت ہوگی۔

گروسی نے اس سے قبل کہا تھا کہ ایران نے مزید اقدامات نہیں کیے۔ تہران نے عالمی طاقتوں کے ساتھ اپنے 2015 کے جوہری معاہدے کی خلاف ورزی جاری رکھی ہوئی ہے۔

اس کے ڈائریکٹر جنرل رافیل ماریانو گروسی نے منگل کے روز 'اے ایف پی' کو بتایا کہ ایجنسی نے ایران کی ایک نئی جوہری تنصیب کے بارے میں تہران سے وضاحت طلب کی ہے۔