.

دبئی کے بھارتی اسکول کی طالبہ میں کرونا وائرس کی تصدیق

متحدہ عرب امارات میں کرونا وائرس کے مریضوں کی مجموعی تعداد 29 ہو گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات میں محکمہ صحت کے حکام نے دبئی میں ایک بھارتی اسکول کی 16 سالہ طالبہ میں کرونا وائرس موجودگی کی تصدیق کی ہے۔

دبئی ہیلتھ اتھارٹی کا کہنا ہے کہ یو اے ای کے اہم کاروباری اور سیاحتی مرکز میں واقع تمام اسکولوں کے طلبہ، ان کے اہل خانہ کی صحت، تحفظ اور خبر گیری کے لئے سخت نوعیت کے پیشگی حفاظتی اقدامات کئے گئے ہیں۔ اپنے ٹویٹ پیغام میں ہیلتھ اتھارٹی نے بتایا کہ دبئی میں تعلیمی سرگرمیوں کی نگرانی کے ذمہ دار ادارے نالج اور ہیومن ڈیویلپمنٹ اتھارٹی کے تعاون سے تمام اسکولوں کو اپنی تعلیمی سرگرمیاں معطل کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

اس سے قبل وزارت صحت اور روک تھام نے متحدہ عرب امارات میں کرونا وائرس کے چھ نئے کیس سامنے آنے کا اعلان کیا تھا۔ وزارت کی طرف سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق عالمی ادارہ صحت کے معیارات کے تحت نئے کیسز کی نگرانی کی جا رہی ہے۔ کرونا وائرس کے چھ نئے مریضوں میں دو روسی، دو اطالوی، ایک جرمن اور ایک کولمبیا کا باشندہ شامل ہیں۔ نئے مریضوں کو متحدہ عرب امارات ٹور میں سائیکلنگ کے مقابلوں کے دوران سامنے آنے والے پہلے سے اعلان کردہ دو مریضوں سے منسلک کیا گیا ہے۔

وزارت صحت نے تصدیق کی ہے کہ ان نئے مریضوں کی نگرانی کی جارہی ہے۔ ان مریضوں کی حالت فی الحال مستحکم ہے اور نھیں تمام ضروری دیکھ بھال فراہم کی جارہی ہے۔ وزارت کا کہنا کہ ان نئے کیسوں کے ساتھ متحدہ عرب امارات میں کرونا وائرس کے مریضوں کی مجموعی تعداد 29 ہو گئی ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ اس سے پہلے مریضوں میں سے پانچ مکمل طور پر صحت یاب ہو چکے ہیں۔ وزارت صحت کے بیان میں کہا گیا ہے کہ دو قرنطائن کئے گئے ہوٹلوں کے اندر موجود ان تمام افراد کا معائنہ کیا گیا جن کا کھلاڑیوں اور ان کی انتظامی ٹیموں سے براہ راست کوئی رابطہ نہیں تھا۔ جن لوگوں میں کرونا وائرس کا ٹیسٹ منفی میں آیا انھیں ہوٹل کے احاطے سے باہر جانے کی اجازت دے دی گئی۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ وہ لوگ جنہیں قورنطائن کیا گیا ہے ان کی مکمل حفاظت کو یقینی بنانے کے لئے وائرس کی دوبارہ جانچ کی جائے گی۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ تمام عمارتوں، سہولتوں اور گاڑیوں پر جراثیم کش سپرے سمیت انکی صفائی ستھرائی کی جائے گی۔ وزارت صحت نے کہا کہ چین میں اس وائرس کے پھیلنے کے بعد سے متحدہ عرب امارات اس سے متعلق تمام معاملات کے حوالے سے شفافیت کے اصولوں پر عمل پیرا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ متحدہ عرب امارات میں تمام متعلقہ ادارے اور حکام صورتحال پر نظر رکھنے اور کرونا وائرس کے مزید پھیلاؤ کو روکنے کے لئے متحد ہوگئے ہیں۔ وزارت نے عام لوگوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ اس وبا کو پھیلنے سے روکنے کے لئے صحت سے متعلقہ حفظان صحت کے اقدامات پر عمل کریں جن میں ہاتھوں کی بار بار دھلائی، کھانسی اور چھینک آنے کی صورت میں منہ اور ناک کو کہنی یا ٹشو سے ڈھکنا اور بخار، کھانسی اور سانس لینے میں دشواری کی علامات پیدا ہونے پر جلد طبی امداد حاصل کرنا شامل ہے۔