.

کرونا وائرس سے اموات کی تعداد 483 ہے : ایرانی میڈیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی ویب سائٹ "ایران انٹرنیشنل" کے عربی پیج نے ٹویٹر پر بتایا کہ ایران کے تمام صوبوں میں کرونا وائرس سے ہونے والی اموات کی تعداد 483 ہو چکی ہے۔ یہ بات بدھ کی شام ذرائع کے حوالے سے بتائی گئی۔ علاوہ ازیں ایرانی ویب سائٹوں کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ قُم شہر کے علمی مرکز (حوزہ) کا ایک معلم محسن حبیبی بھی کرونا سے متاثر ہو کر وفات پا گیا ہے۔ اس بات کی تصدیق ایرانی ویب سائٹ "انتخاب" نے بھی کر دی ہے۔

ادھر فارسی زبان کی ویب سائٹ "پِیک ایران" نے انکشاف کیا ہے کہ پاسداران انقلاب کی انٹیلی جنس کا ایک کمانڈر کرونا وائرس کے سبب چل بسا۔ ویب سائٹ کے مطابق رمضان پور قاسم پاسداران انقلاب کی انٹیلی جنس کا کمانڈر ہونے کے ساتھ حسن روحانی کی پہلی اور دوسری حکومت میں ٹیلی کمیونی کیشن کا نائب وزیر بھی رہ چکا ہے۔ وہ ساری شہر میں خمینی ہسپتال میں فوت ہوا۔ تاہم دیگر ایرانی ویب سائٹوں کا کہنا ہے کہ رمضان کی طبعی موت واقع ہوئی ہے۔

اس سے قبل ایرانی صدر حسن روحانی نے اعلان کیا تھا کہ نیا کرونا وائرس ملک کے قریباً تمام 31 صوبوں میں پھیل چکا ہے۔ بدھ کے روز حکومتی ارکان سے گفتگو کرتے ہوئے روحانی کا کہنا تھا کہ "تیزی سے پھیلنے والے اس عالمی مرض نے کئی ملکوں کو لپیٹ میں لے لیا ہے۔ ہمیں اس مشکل سے نمٹنے کے لیے جلد از جلد کام کرنا چاہیے"۔

ایرانی وزارت صحت کے ترجمان کے مطابق ایران میں کرونا وائرس کے سبب فوت ہونے والے افراد کی تعداد 92 ہو گئی ہے۔ ان کے علاوہ ملک میں کرونا کے 2922 تصدیق شدہ کیس موجود ہیں۔ ایران میں ہونے والی ہلاکتیں چین کے بعد دنیا بھر میں دوسرے نمبر پر ہیں۔

مہر نیوز ایجنسی نے نماز جمعہ کے آئمہ سے متعلق عام پالیسیوں کا تعین کرنے والی کونسل کے سربراہ علی اکبر زیدی کے حوالے سے بتایا کہ ایران کے تمام صوبوں کے صدر مقامات پر نماز جمعہ کے اجتماعات کو منسوخ کر دیا گیا ہے۔

ادھر "ايران وائر" ویب سائٹ نے بدھ کے روز بتایا کہ ایران کے نائب صدر اسحاق جہانگیری بھی کرونا وائرس سے متاثر ہو چکے ہیں۔ جہانگیری کو اس وقت ان کے گھر کے اندر طبی قید میں رکھا گیا ہے جہاں ان کا علاج جاری ہے۔

اس سے قبل "ایران نیوز" ویب سائٹ نے بریکنگ نیوز میں بتایا کہ ایرانی وزیر صنعت رضا رحمانی بھی کرونا وائرس میں مبتلا ہو چکے ہیں۔ اس بات کی تصدیق "عصر ايران" ویب سائٹ نے بھی کی ہے۔ مذکورہ ویب سائٹ کے مطابق وزیر صنعت کو اس وقت انتہائی نگہداشت کے شعبے میں رکھا گیا ہے۔ دوسری جانب وزارت صنعت نے ایرانی وزیر رضا رحمانی کے کرونا سے متاثر ہونے کی تردید کی ہے۔

ایرانی پارلیمان کے ڈپٹی اسپیکر عبدالرضا مصری نے گذشتہ روز ایک بیان میں بتایا تھا کہ پارلیمان کے 23 ارکان کے کرونا وائرس کے ٹیسٹ مثبت آئے ہیں۔