.

لیبی فوج نے قومی وفاق کے زیر استعمال گولہ بارود گودام تباہ کر دیا، نئے حملے کی تیاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کی فوج نے دارالحکومت طرابلس کے جنوب مشرق میں الموز پروجیکٹ کے قریب السبعہ کے علاقے میں قومی وفاق کی وفادار ایک ملیشیا کے ٹھکانے پر جمعرات کے روز کم سے کم 10 گولے داغے جس کے نتیجے میں وہاں پر موجود اسلحہ کا ایک بڑا ڈپو تباہ ہو گیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق باغی جنرل خلیفہ حفتر کی قیادت میں قائم نیشنل آرمی کی طرف سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ فوج نے دارالحکومت طرابلس کے جنوب میں واقع العزیزیہ علاقے میں الوفاق فورسز کا ایک بڑا حملہ پسپا کردیا۔ جس کے بعد نیشنل آرمی اپنی سابقہ پوزیشن بحال کرنے میں ایک بار پھر کامیاب ہوگئی ہے۔

دوسری جانب قومی وفاق اور نیشنل آرمی دونوں نے اپنی اپنی پوزیشنوں پر کمک میں اضافہ کرنے کے بعد اگلے معرکے کی تیاری شروع کردی ہے۔

العربیہ کے مطابق لیبی فوج نے دارالحکومت طرابلس کے قریب اپنے ٹھکانوں پر تازہ دم دستے تعینات کیے ہیں۔ اس کے علاوہ لیبی فوج نے خفیہ طور پر اپنی عسکری سرگرمیوں کو تیز کردیا ہے۔

دوسری طرف قومی وفاق حکومت کے وفادار عسکری گروپ اور فوج نے فرنٹ لائن پر اپنی افرادی قوت میں اضافہ کیا ہے۔ دونوں اطراف سے کی جانے والی تیاریاں آنے والے دونوں کے کسی نئے معرکے کی تیاری ہیں۔ اگر ایسا ہوتا ہے تو پہلے سے کمزور جنگ بندی مکمل طور پر ختم ہو سکتی ہے۔

اس تناظر میں لیبیا کی فوج کے ترجمان میجر جنرل احمد المسماری نے بدھ کے روز ایک پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ "آنے والے دنوں میں دارالحکومت طرابلس کے مغربی فوجی زون میں تمام محاذوں پر سخت لڑائی کا امکان ہے" ان کا کہنا تھا کہ اس علاقے میں قومی وفاق حکومت کو اپنی عسکری قوت جمع کرتے دیکھا گیا ہے۔