.

کیتھرین کے مجسمے کے بعد "جنگ کی گھڑی" ایردوآن اور پوتین کے بیچ متنازع بن گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوشل میڈیا پر سرگرم صارفین نے ایک گھڑی کی تصویر وائرل کی ہے۔ یہ گھڑی جمعرات کے روز ماسکو میں روسی صدر کے اپنے تُرک ہم منصب سے ملاقات کے موقع پر ولادی میر پوتین اور رجب طیب ایردوآن کے درمیان عقب میں رکھی نظر آ رہی ہے۔ اس سے قبل ملاقات کے کمرے میں رکھا ہوئے ایک مجسمے نے بھی میڈیا کی نظریں اپنی جانب مبذول کرا لی تھیں۔ یہ مجسمہ روسی خاتون شہنشاہ کیتھرین دوم کا ہے۔ کیتھرین دوم نے 18 ویں صدی کے دوران عثمانی سلطنت کے فرماں رواؤں کو شکست دی تھی۔

سوشل میڈیا پر بعض افراد نے پوتین اور ایردوآن کے بیچ رکھی ہوئی گھڑی کو ترک صدر کی توہین کے مترادف قرار دیا ہے۔ اس لیے کہ کانسی کی یہ گھڑی 1877-1878 میں بلغاریہ میں ہونے والی جنگ کی یاد دلاتی ہے۔ اس جنگ میں روسی فوج نے ترکی کی فوج کو شکست دی تھی۔ مذکورہ حلقوں کے مطابق ملاقات کی جگہ ان دونوں چیزوں کی موجودگی کا مقصد پوتین کی جانب سے اپنے تُرک مہمان کو "طاقت" کا پیغام دینا تھا۔

البتہ دیگر حلقوں کے نزدیک یہ دونوں چیزیں عام شو پیش کی حیثیت رکھتی ہیں جو دیگر ملاقاتوں کی طرح اس بار بھی استقبالیہ ہال میں موجود پائی گئیں۔

دوسری جانب ایک وڈیو کلپ وائرل ہوا ہے جس میں ترک صدر ایردوآن بوکھلاہٹ کا شکار نظر آ رہے ہیں۔ روسی صدر پوتین کے ساتھ طویل مذاکرات کے بعد ایردوآن باہر آئے تو ترک وزیر خارجہ چاوش مولود اولو اپنے روسی ہم منصب سرگئی لاؤروف کے ساتھ گفتگو میں مصروف تھے۔ اس موقع پر ایردوآن نے اولو سے مصافحے کے لیے اپنا بڑھا دیا مگر آخر الذکر اپنی گفتگو میں منہمک رہے اور ترک صدر کے بڑھائے ہوئے ہاتھ کی جانب توجہ نہ کر سکے۔

اس سے قبل رجب طیب ایردوآن کے ہمراہ وفد کی کیتھرین دوم کے مجسمے کے نیچے کھڑے ہو کر بنوائی گئی تصاویر نے سوشل میڈیا پر ترک حلقوں میں غم و غصے کی لہر دوڑا دی۔ کیتھرین دوم نے کئی معرکوں میں عثمانیوں کو ہزیمت سے دوچار کیا تھا۔

بلغاریہ میں جنگ کی یاد دلانے والی گھڑی اور کیتھرین کے مجسمے وہ واحد شے نہیں جس نے سوشل میڈیا پر تبصروں کی آگ بھڑکا دی۔ اس لیے کہ ایردوآن اور پوتین کے بیچ ملاقات سے چند روز قبل روسی وزارت خارجہ نے اپنے طور پر بھی تنازع کھڑا کر دیا تھا۔ روسی وزارت کی جانب سے فیس بک کے پیج پر 1877-78 کے دوران روس اور سلطنت عثمانیہ کے درمیان ہونے والی جنگوں سے متعلق پوسٹ کی گئی۔