.

مُتحدہ عرب امارات میں اقامہ کی خلاف ورزی پرجرمانے معاف

واپسی کےخواہش مند تارکین وطن کو رخصت دینے کا فیصلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات کی وزارت صحت نے اتوار کے روز اعلان کیا ہے کہ اس نے کرونا وائرس سے متاثرہ مختلف ملکوں کے294 مریضوں میں سے 19 صحت یاب ہوگئے ہیں۔

دوسری طرف متحدہ عرب امارات کی حکومت نے کرونا بحران کے موقع پر غیرملکیوں کے لیے مزید سہولیات دینے اور ان کے لیے آسانی پیدا کرنے کے اقدامات کیے ہیں۔ امارات نے اقامہ قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کے جرمانے رواں سال کے آخر تک معاف کرنے کا اعلان کیا ہے اور ساتھ ہی کہا ہے کہ اگر کوئی غیرملکی شہری کرونا سے محفوظ ہے اور وہ اپنے ملک واپس جانا چاہتا ہے تو اسے کام سے رخصت دی جائے گی۔

اس کے ساتھ ساتھ اماراتی حکومت نے دوا ساز کارخانوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ شہریوں کی صحت سے متعلق ضروری سامان اور ادویات کی تیاری کو یقینی بنائیں۔

متحدہ عرب امارات کی وزارت برائے انسانی وسائل اور شہریت نے وزارت خارجہ اور بین الاقوامی تعاون ، سول ایوی ایشن اتھارٹی اور نیشنل اتھارٹی برائے ایمرجنسی ، کرائسز اینڈ ڈیزاسٹر مینجمنٹ کے تعاون سےغیرملکی شہریوں کے لیے پیشگی رخصت کا پلان تیار کیا ہے۔ ایسے غیرملکی شہری کو کرونا سے محفوظ ہیں اگر وطن واپس جانا چاہتےہیں تو ان کی واپسی کے انتظامات کیے جائیں گے اور کرونا بحران تک انہیں رخصت دی جائے گی۔ ان کی سالانہ تعطیلات کو اس رخصت میں شامل کیا جائے گا تاہم یہ تعطیلات بلا معاوضہ ہوں گی۔

متحدہ عرب امارات کی کابینہ نے کرونا بحران کے موقعے پر مزید اقدامات کا اعلان کیا ہے۔ حکام کو ہدایت کی گئی ہے کہ ملک میں اقامہ قانون کی خلاف ورزی کرتے ہوئے رہائش پذیر افراد کو رواں سال کے آخر تک جرمانوں سے مستثنیٰ قرار دیا جائے۔

قابل ذکر ہے کہ دبئی میں کرائسز اینڈ ڈیزاسٹر منیجمنٹ کی سپریم کمیٹی نے ہفتے کے مزید 24 گھںٹے تک جراثیم کش اسپرے کرنے کا اعلان کیا تھا۔ اسپرے کا عمل رات 8 بجے شروع ہوا۔ اس موقعے ہر قسم کی ٹریفک بند کر دی گئی ہے۔