.

رمضان المبارک میں عشا کی اذان میں تاخیر نہ کرنے کی ہدایت

مملکت کی مساجد میں عوام کی سہولت کے لئے عشا کی اذان میں تاخیر کا رواج تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے وزیر اسلامی امور ڈاکٹر الشيخ عبداللطيف بن عبدالعزيز آل الشيخ نے رمضان المبارک کے دوران عشا کی اذان وقت پر دینے کی ہدایت کی ہے۔

مملکت کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ’’ایس پی اے‘‘ کے مطابق وزیر اسلامی امور ودعوۃ والارشاد کی جانب سے جاری ہونے والے احکامات میں مزید کہا گیا ہے کہ مملکت کی تمام مساجد میں عشا کی اذان میں حسب سابق تاخیر نہ کی جائے جو عام طور پر ماہ رمضان میں کرنے کا رواج تھا‘-

کرونا وائرس کی وجہ سے مملکت کی تمام مساجد میں جماعت کے ساتھ فرض نمازوں کو عارضی طور پر روک دیا گیا ہے- مساجد میں صرف پانچوں وقت کی اذان دی جاتی ہے، ہر اذان کے ساتھ موذن ’نماز گھروں میں ادا کریں ‘ کے الفاظ کا اضافہ کرتے ہیں-

یاد رہے سعودی عرب میں ہر برس ماہ رمضان المبارک میں روزہ افطار کرنے کے بعد عشا کی آذان میں کچھ دیر کی تاخیر کر دی جاتی تھی تاکہ لوگوں کو سہولت ہو اور وہ افطاری کے کچھ دیر بعد آرام کرکے نماز کے لیے وقت پر مساجد میں پہنچ سکیں۔ رواج کے مطابق بعض مساجد میں عشا کی آذان اور جماعت کے درمیان وقفہ بڑھا دیا جاتا تھا جبکہ بعض مساجد میں صرف آذان میں تاخیر کی جاتی تھی-

کرونا کی موجودہ صورتحال کے حوالے سے جب تمام مساجد میں نماز باجماعت پر عارضی پابندی عائد ہے ایسے میں وزیر اسلامی امور نے عشا کی آذان میں تاخیر کرنے کے عمل کو روک دیا ہے تاکہ لوگ گھروں میں ہی بر وقت نماز ادا کرلیں-

یاد رہے کرونا وائرس کی وجہ سے مملکت کے تمام شہروں میں کرفیو نافذ ہے جبکہ جدہ سمیت 9 شہروں میں کرفیو اورلاک ڈاون 24 گھنٹے کا ہے- اس دوران بعض علاقوں کو مکمل طور پر سیل بھی کیا گیا ہے جہاں رہنے والے دوسرے علاقے میں نہیں نہ جا سکتے اور نہ ہی دوسرے علاقے کے لوگ ان علاقوں جا سکتے ہیں-