.

قطر ایئرویز کے ملازمین کی آدھی تنخواہوں کی ادائیگی 3 ماہ کے لیے ملتوی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قطر کی قومی فضائی کمپنی "قطر ایئرویز" نے ایک اعلان میں بتایا ہے کہ کمپنی میں درمیانی سطح اور اس سے اوپر کے درجے کے ملازمین کی تنخواہوں کو کم از کم تین ماہ کے لیے کم کر کے آدھا کیا جا رہا ہے۔

منگل کے روز جاری بیان میں قطر ایئرویز کا کہنا تھا کہ تنخواہوں کا یہ جزوی التوا عارضی اقدام ہے ... اور توقع ہے کہ اپریل سے آغاز کے بعد یہ تین ماہ تک جاری رہے گا۔ تاہم کمپنی نے اس جانب بھی اشارہ کیا کہ "اقتصادی صورت حال کے پیش نظر" اس مدت میں توسیع کی جا سکتی ہے۔

قطرایئرویز کے مطابق فی الوقت تنخواہوں کا ادا نہ کیا جانے والا حصہ حالات بہتر ہونے پر جلد از جلد ادا کر دیا جائے گا۔

قطری فضائی کمپنی نے اُن کارکنان کی تعداد نہیں بتائی جو اس التوا سے متاثر ہوں گے۔

اس سے قبل 18 مارچ کو فلپائن کے وزیر محنت نے بتایا تھا کہ قطر ایئرویز نے اپنے ہاں کام کرنے والے تقریبا 200 ملازمین کو اچانک فارغ کر دیا۔

قطر ایئرویز کے چیف ایگزیکٹو اکبر الباکر نے مارچ کے اواخر میں بیان دیا تھا کہ ان کی کمپنی آخر کار حکومتی مالی سپورٹ طلب کرنے پر مجبور ہو جائے گی۔ انہوں نے خبردار کیا تھا کہ پروازوں کا آپریشن جاری رکھنے کے لیے مطلوب سیالیت ختم ہونے کے قریب ہے۔

الباکر کے مطابق کمپنی کے ملازمین نے تنخواہ اور تنخواہ کے بغیر رخصتیں حاصل کی ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ بعض ملازمین کی جانب سے اجرتیں کم کرنے کی پیش کش کے باوجود کمپنی نے ملازمین کو تنخواہوں میں کمی پر مجبور نہیں کیا۔

کرونا وائرس کی وبا سے قبل قطر ایئرویز نے خبردار کیا تھا کہ اسے رواں مالی سال کے دوران مسلسل تیسری مرتبہ خسارے کا سامنا ہو گا۔