.

'پاسداران انقلاب نے سپریم لیڈر کے لیے انسانی جانوں کی قربانی دی'

یوکرینی طیارے میں ہلاک ہونے والی خاتون کا شوہر ایرانی لیڈر شپ پربرہم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران میں 8 جنوری کو یوکرین کے ایک مسافر جہاز کو میزائل مار کر گرائے جانے کے واقعے میں ہلاک ہونے والی ایک ایرانی خاتون کےشوہر نے ایرانی لیڈر شپ کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

حادثے میں ماری جانے والی خاتون 'ناز نبیئی' کے شوہر جواد سلیمانی نے ایرانی فضائیہ کے سربراہ امری علی حاجی زادہ کے ایک تازہ بیان کو 'بدعنوانی' اور جعلی سازی کا ثبوت قرار دیا ہے۔

ایران انٹرنیشنل چینل کی ویب سائٹ کے مطابق جواد سلیمانی نے کہا کہ ایرانی پاسداران انقلاب اس کی بیوی کے قتل کا ذمہ دار ہے۔ پاسدارا انقلاب نے اپنے سپریم لیڈر کے لیے انسانی جانوں کی قربانی دی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق جواد سلیمانی نے اپنے ٹویٹر اکائونٹ پر ایرانی فضائیہ کے سربراہ کو مخاطب کرکے لکھا کہ ' مسٹر حاجی زادہ تم باتیں زیادہ کرتے ہو اگر تم نے امریکا کے 400 مراکز پر بمباری کا منصوبہ بنایا تھا تو ایران میں مسافر جہازوں کی آمد ورفت کیوں جاری رکھی گئی۔ یہ تمہارے جرم کا واضح ثبوت ہے، تم یہ کہتے ہو کہ امریکا نے سپریم لیڈر کی رہائش گاہ پر بمباری کا منصوبہ بنایا تھا تو تم نے نو فلائی ازون کا اعلان کیوں نہ کیا۔ یہ تمہارے جھوٹ کی کھلی دلیل ہے'۔ جواد نے استفسار کیا کہ کیا تم اپنے لیڈر (خامنہ ای) کے لیے انسانی جانوں کی قربانی دینا چاہتے تھے۔ شرم کرو!۔

ایرانی فضائیہ کے سربراہ نے سرکاری ٹی وی کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے دھمکی دی تھی کہ اگر قاسم سلیمانی کے قتل کا جواب دیا گیا تو امریکا ایران میں 52 ثقافتی مقامات کوبمباری سے نشانہ بنائے گا۔ امریکا کے اس منصوبے میں سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای کی تہران میں موجود رہائش گاہ بھی شامل تھی۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سلیمانی کے قتل کے بعد ایران کو خبردار کیا تھا کہ وہ جوابی کارروائی سے باز رہے ورنہ ایران میں باون اہم ثقافتی مراکز کو بمباری سے نشانہ بنایا جاسکتا ہے تاہم امریکی صدر کی طرف سے ان اہداف کی تفصیل بیان نہیں کی گئی۔

ایران نے امریکی دھمکی کو نظر انداز کرتے ہوئے 8 جنوری کو عراق میں امریکا کےزیرانتظام دو فوجی اڈوں پر میزائل حملے کیے جن میں ایک سو سے زاید امریکی فوجی زخمی ہوگئے تھے۔

حاجی زادہ کا کہنا تھا کہ پاسداران انقلاب کی طرف سے عراق میں دو امریکی فوجی اڈوں کو نشانہ بنانے کے بعد 400 دوسرے اہداف کا بھی تعین کیا گیا تھا۔ اگر امریکا مزید کاروائی کرتا تو اس کے بعد اس کے 400 مراکز کو نشانہ بنایا جاتا۔

آٹھ جنوری کی رات کو ایران میں یوکرین کا ایک مسافر طیارہ ایرانی میزائل حملے میں تباہ ہوگیا تھا۔ ایران نے اسے انسانی غلطی قراردیتے ہوئے یوکرین سے معافی بھی مانگی ہے۔ اس ہوائی جہاز پرعملے سمیت 176 افراد سوار تھے جو سب ہلاک ہوگئے تھے۔ ہلاک ہونے والوں میں ناز نبیئی نامی ایک خاتون بھی شامل تھی۔