.

سعودی خاتون فوٹو گرافر کا نظرکی عینک سے ماضی اور حال کا دلکش امتزاج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی ایک خاتون فوٹو گرافر نے روایتی فوٹو گرافی سے ہٹ کرماضی اور حال کو کچھ ایسے دلکش انداز میں پیش کیا ہے کہ دیکھنے والے مبہوت ہوکر رہ گئے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق خاتون فوٹو گرافر'سارہ آل مقبل' نے نظرکی عینک سے ماضی اور حال کو دلفریب انداز میں ایک دوسرے سے جوڑ کرلوگوں کی غیرمعمولی توجہ حاصل کی ہے۔

اس نے مشرقی سعودی عرب کی الخبر گونری میں پرانے محلوں میں موجود از کار رفتہ اور بوسیدہ گاڑیوں کے ڈھانچوں ماڈرن فیشن ماڈلز کے ساتھ کچھ ایسے دلفریب انداز میں جوڑا ہے کہ دیکھنے والا اس کی پیشہ وارانہ مہارات کو داد تحسین دیے بغیر نہیں رہ سکتا۔

فوٹوگرافر سارہ مقبل نے 12 سال کی عمر میں فوٹو گرافی کے شوق کا عملی سفر شروع کیا۔'العربیہ ڈاٹ نیٹ' سے بات کرتے ہوئے اس بتایا کہ اس قسم کی فوٹو گرافی اس کے روز مرہ فوٹو گرافی کے کام سے مختلف ہے۔ فوٹو سے محبت کرنے والوں نے ان شارٹس کوبہت پسند کیا اور بہت سے لوگوں نے تصاویر کو آگے شیئر کیا۔سارہ کا کہنا ہے کہ اس نے فیش ماڈل غادہ کوجدید لڑکیوں نمائندگی کرنے کے لیے چنا مگر تصویر کی روح اور اصل اس کا ماضی کا پہلو ہے۔ تصویر میں غادہ کو سر پر عبایا پہن کر 1969 ماڈل کی سرخ کار کے ذریعے سبزی منڈی اور پھر لکڑ کی منڈی جاتی ہے۔ سارہ نے مزید کہا کہ تصاویر لیتے وقت اس نے سورج کی روشنی پرانحصار کیا اور تصاویر میں حیران کر دینے والے زاویوں سے تصاویر اتاریں۔

ایک سوال کے جواب میں سارہ مقبل نے کہا کہ فوٹو گرافی سے میرے بے پناہ شوق اور محبت نے آج مجھے شہرت کے اس بلند مقام تک پہنچایا ہے۔