.

یمن میں حوثی باغیوں کی طرف سے 24 گھنٹوں میں جنگ بندی کی 105 خلاف ورزیاں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کے دفاع کے لیے قائم کردہ عرب اتحاد نے اتوار کی شام ایک بیان جاری کیا۔ بیان میں بتایا گیا کہ ایرانی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا نے کرونا کے سبب کی گئی جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔

العربیہ چینل کے مطابق بیان میں کہا گیا ہے کہ گذشتہ 24 گھںٹوں کے دوران حوثی باغیوں نے یمن میں جنگ بندی کی 105 بار خلاف ورزی کی۔ حوثی باغیوں کی جانب سے مجموعی طور پر 3564 خلاف ورزیوں کا ارتکاب کیا جا چکا ہے۔

بیان کے مطابق حوثی باغیوں کی طرف سے مسلح کاروائیاں کی گئیں جن میں ہلکے اور بھاری ہتھیاروں کا استعمال کیا گیا۔

عرب اتحاد کا کہنا ہے کہ وہ حوثی باغیوں کی جانب سے جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کے باوجود تحمل کا مظاہرہ کررہا ہے اور حوثیوں کی اشتعال انگیزی کا جواب نہیں دیا گیا۔ تاہم اتحاد خبردار کرتا ہے کہ اگر حوثیوں کی طرف سے جنگ بندی کی خلاف ورزیاں جاری رہیں تو عرب فوجوں کو اپنے دفاع کا حق حاصل ہے۔

خیال رہے کہ یمن میں آئینی حکومت کے دفاع کے لیے قائم عرب اتحاد نے کرونا کی وبا اور رمضان مبارک کے پیش نظر 8 اپریل کو جنگ بندی کا اعلان کیا تھا۔ بعد ازاں 23 اپریل کو جنگ بندی کی مدت میں مزید ایک ماہ کی توسیع کی گئی ہے۔

دوسری جانب باغی حوثی ملیشیا نے اپنے عناصر کو غریب افراد کے تعاقتب اور رمضان میں محدود پیمانے پر دی گئی امداد کو لوٹ لینے کے لیے گرین سگنل دے دیا۔ یہ امداد تاجر اور کاروباری حضرات ہر سال رمضان میں پیش کرتے ہیں۔

متعدد مقامی ذرائع نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو اس امر کی تصدیق کی ہے کہ حوثی ملیشیا اپنے زیر قبضہ علاقوں میں تاجروں اور کاروباری افراد کو ملیشیا کے زیر انتظام فنڈز سے باہر رہ کر کسی بھی قسم کی امداد یا صدقہ خیرات تقسیم کرنے سے روک دیا ہے۔ اس کا مقصد تمام تر مالی معاونت کو ملیشیا کی قیادت اور جنگی اخراجات کی سپورٹ کے واسطے استعمال میں لانا ہے .. جب کہ لاکھوں یمنیوں کو غیر معمولی نوعیت کے الم ناک حالات کا سامنا ہے۔