.

مدینہ منورہ گورنری میں لیبر کی رہائشی مشکلات دور کر دی گئیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مدینہ منورہ گورنری نے علاقائی گورنر شہزادہ فیصل بن سلمان بن عبدالعزیز آل سعودی کی ہدایت پر گورنری میں غیرملکی لیبر کی رہائش کے مسائل اور مشکلات دور کردی ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق حالیہ ایام میں مدینہ گورنری میں رہائشی علاقوں میں بڑی تعداد میں غیرملکی لیبر کی موجودگی کی وجہ سے مقامی آبادی اور لیبر کو مشکلات کاسامنا کرنا پڑا تھا۔ کرونا کی وبا کی وجہ سے پیدا ہونے والے بحران کے باعث غیرملکی لیبر کی مشکلات دور کردی گئی ہیں۔

مدینہ منورہ کے گورنر شہزادہ فیصل بن سلمان نے انتظامیہ کو ہدایت کی تھی کہ وہ جلد از جلد غیرملکی لیبر کی رہائشی مشکلات حل کریں۔ اس حوالے سے مدینہ گورنری نے فوری اقدامات کرتے ہوئے لیبر کے رہائشی مسائل کے حل کے لیے ایک کمیٹی تشکیل جس نے بر رفتاری سے کام کرتے ہوئے غیرملکی لیبر کی مشکلات کے حل کے لیے اقدامات ٹھائے۔

حکام کی جانب سے آبادی کےاندر رہائش پذیر غیرملکی ملازمین کی رہائشی ضروریات کےساتھ ساتھ انہیں ہرممکن طبی امداد بھی فراہم کی گئی ہے۔

سعودی پریس ایجنسی'ایس پی اے' کے مطابق مدینہ گورنری نے محکمہ صحت کے حکام کے ساتھ مل کر غیرملکی ملازمین کے طبی معائنے کا عمل مکمل کرلیا ہے۔ لیبر کی تعداد میں اضافے کےبعد پید ہونے والے صورت حال پرقابو پالیا گیا ہے۔ رہائشی مقامات میں لیبر کی تعداد کم کرنے کے لیے متبادل رہائشی فلیٹ مہیا کیے گئے ہیں۔

اس حوالے سے سعودی عرب کے مختلف سرکاری اداروں کے 70 ذمہ داران پر مشتمل کمیٹی تشکیل دی گئی تھی جس نے مدینہ گورنری میں لیبر کے لیے مختص 800 رہائشی مراکز میں موجود 50 ہزار غیرملکی ملازمین کی مشکلات میں ان کی مدد کی۔ 3000 ملازمین کو ہنگامی قیام کےلیے ہوٹلوں میں منتقل کیا گیا۔ لیبر کو 40 ہزار خوراک کےپیکٹ فراہم کیے گئے جب کہ ماہ صیام کےدوران غیرملکی لیبر کو 4 لاکھ 88 ہزار کھانے تقسیم کیے جائیں گے۔