.

سعودی فرماں رواؤں کے ذاتی محافظ سعدی بن شنیبر کی رحلت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی فرماں رواؤں کے ذاتی محافظ اور ساتھ سعدی بن شنیبر چھیبس رمضان کو 96 برس کی عمر میں خاموشی کے ساتھ اس دنیا سے رخصت ہو گئے۔ ان کو شاہ خالد اور شاہ فہد کا ساتھ حاصل رہا۔ اس سے قبل وہ مملکت کے بانی شاہ عبدالعزیز کے ذاتی محافظین کے دستے میں شامل رہے۔ انہوں نے سعودی عرب کی تاریخ کے مختلف مرحلے دیکھے۔ سعدی کی خدمات کا سلسلہ 45 برس سے زیادہ عرصے پر محیط ہے۔ یہ سلسلہ ان کی کم عمری میں شروع ہو گیا تھا۔

سعدی بن شنیبر نے 17 برس کی عمر میں روزگار کی تلاش میں دیہی علاقے سے شہر کا رخ کیا۔ انہیں یہ معلوم نہ تھا کہ وہ شاہی خاندان میں سعودی عرب کے فرماں رواؤں کے گرد خدمات انجام دیں گے۔ وہ سترہ برس کی عمر میں عسکری شعبے بالخصوص شاہی محافظین کے ساتھ وابستہ ہو گئے۔ جلد ہی وہ شاہ عبدالعزیز کے ذاتی محافظین میں شامل ہو گئے اور پھر مملکت کے بانی کی وفات تک ان کے ساتھ رہے۔

KSA: Royal Guard

سعدی بن شنیبر نے آنے والے فرمارواؤں کے ساتھ کام جاری رکھا۔ انہیں شاہ عبدالعزیز کے پوتوں کا انتہائی اعتماد حاصل رہا۔ سعدی نے شاہد فیصل بن عبدالعزیز کے ساتھ کام کیا اور ان کی وفات تک ساتھ رہے۔ شاہ خالد کے تخت پر بیٹھنے کے بعد انہوں نے سعدی کو ذاتی ساتھی بنا لیا۔ یہاں تک کہ وہ اور شاہ خالد ایک دوسرے کے لیے بڑی حد تک لازم و ملزوم بن گئے۔

KSA: Royal Guard

شاہ خالد کی وفات کے بعد شاہ فہد نے حکم رانی سنبھالی۔ اب کچھ تبدیل نہیں ہوا اور بن شنیبر پر شاہی خاندان کا عتماد بدستور قائم رہا۔ شاہ فہد نے سعدی کو ذاتی ساتھی بنا لیا اور وہ سعودی فرماں روا کے ہر بیرونی سفر میں ان کے ساتھ رہے۔

KSA: Royal Guard

اس طرح 45 برس تک خدمات انجام دینے کے بعد سعدی بن شنيبر نے شاہ فہد سے درخواست کی کہ عمر رسیدہ ہونے ہو جانے کے سبب وہ خدمات کی انجام دہی جاری نہیں رکھ سکتے ،،، لہذا انہیں سبک دوش کر دیا جائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں